affiliate marketing Famous Urdu Poetry

Tuesday, 19 August 2014

Tery pas jitne jawab thay teri ik nigah mein aa gaey تیرے پاس جتنے جواب تھے تیری اک نگاہ میں آ گئے

جو اتر کے زینۂِ شام سے تیری چشم ِخوش میں سما گئے
وہی جلتے بجھتے چراغ سے میرے بام و در کو سجا گئے

یہ عجیب کھیل ہے عشق کا میں نے آپ دیکھا یہ معجزہ
وہ جو لفظ میرے گماں میں تھے وہ تیری زبان پر آگئے

وہ جو گیت تم نے سنا نہیں میری عمر بھر کا ریاض تھا
میرے درد کی تھی داستاں جسے تم ہنسی میں اڑا گئے

وہ چراغ ِجاں کبھی جس کی لو نہ کسی ہوا سے نگوں ہوئی
تیری بیوفائی کے وسوسے اسے چپکے چپکے بجھا گئے

وہ تھا چاند شام ِوصال کا کہ تھا روپ تیرے جمال کا
میری روح سے میری آنکھ تک کسی روشنی میں نہا گئے

یہ جو بندگان ِنیاز ہے یہ تمام ہیں وہ لشکری
جنہیں زندگی نے اماں نہ دی تو تیرے حضور میں آ گئے

تیری بے رخی کے دیار میں میں ہوا کے ساتھ ہَوا ہوا
تیرے آئینے کی تلاش میں میرے خواب چہرہ گنوا گئے

تیرے وسوسوں کے فشار میں تیرا شرار ِرنگ اجڑ گیا
میری خواہشوں کے غبار میں میرے ماہ و سال ِوفا گئے

وہ عجیب پھول سے لفظ تھے تیرے ہونٹ جن سے مہک اٹھے
میرے دشتِ خواب میں دور تک کوئی باغ جیسے لگا گئے

میری عمر سے نہ سمٹ سکے میرے دل میں اتنے سوال تھے
تیرے پاس جتنے جواب تھے تیری اک نگاہ میں آ گئے

Ek yaad baki hai ﺍﯾﮏ ﯾﺎﺩ ﺑﺎﻗﯽ ﮨﮯ

ﺟﮭﯿﻞ ﮐﯽ ﺍﺩﺍﺳﯽ ﻣﯿﮟ
ﺑﮯ ﺩﻟﯽ ﮐﯽ ﺩﻟﺪﻝ ﭘﺮ
ﺑﮯ ﺧﺒﺮ ﺳﮯ ﻣﻨﻈﺮ ﮨﯿﮟ
ﺩﺭﺩ ﮐﮯ ﺳﻤﻨﺪﺭ ﻣﯿﮟ
ﺍﯾﮏ ﯾﺎﺩ ﺑﺎﻗﯽ ﮨﮯ
ﺁﻧﮑﮫ ﻣﯿﮟ ﺧﺰﺍﮞ ﺭﺕ ﮨﮯ
ﮔﺮﺩ ﺍﮌﺍﺗﯽ ﺭﮨﺘﯽ ﮨﮯ
ﭘﮭﺮ ﺑﮭﯽ ﺍﯾﮏ ﮐﻮﻧﮯ ﻣﯿﮟ
ﺍﮎ ﮔﻼﺏ ﺑﺎﻗﯽ ﮨﮯ
ﺍﯾﮏ ﯾﺎﺩ ﺑﺎﻗﯽ ﮨﮯ

کچھ کہنے کا وقت نہیں یہ، کچھ نہ کہو، خاموش رہو

کچھ کہنے کا وقت نہیں یہ، کچھ نہ کہو، خاموش رہو
اے لوگو خاموش رہو, ہاں اے لوگو، خاموش رہو

سچ اچھا، پر اس کے جلو میں، زہر کا ہے اک پیالا بھی
پاگل ہو؟ کیوں ناحق کو سقراط بنو، خاموش رہو

حق اچھا، پر اس کے لئے کوئی اور مرے تو اور اچھا
تم بھی کوئی منصور ہو جو سُولی پہ چڑھو؟ خاموش رہو

اُن کا یہ کہنا سورج ہی دھرتی کے پھیرے کرتا ہے
سر آنکھوں پر، سورج ہی کو گھومنے دو، خاموش رہو

مجلس میں کچھ حبس ہے اور زنجیر کا آہن چبھتا ہے
پھر سوچو، ہاں پھر سوچو، ہاں پھر سوچو، خاموش رہو

گرم آنسو اور ٹھنڈی آہیں ، من میں کیا کیا موسم ہیں
اس بگھیا کے بھید نہ کھولو، سیر کرو، خاموش رہو

آنکھیں موند کنارے بیٹھو، من کے رکھو بند کواڑ
انشا جی لو دھاگہ لو اور لب سی لو، خاموش رہو

Wohi hua na ... ﻭﮨﯽ ﮨﻮﺍ ﻧﺎ

! ﻭﮨﯽ ﮨﻮﺍ ﻧﺎ
ﮐﮩﺎ ﻧﮩﯿﮟ ﺗﮭﺎ ﮐﮧ ﻋﮩﺪ ﺍﻟﻔﺖ , ﺳﻤﺠﮫ ﮐﮯ ﺑﺎﻧﺪﮬﻮ
ﻧﺒﮭﺎ ﺳﮑﻮ ﮔﮯ
ﻣﺠﮭﮯ ﺳﻤﮯ ﮐﯽ ﺗﻤﺎﺯﺗﻮﮞ ﺳﮯ
ﺑﭽﺎ ﺳﮑﻮ ﮔﮯ
ﺑﮩﺖ ﮐﮩﺎ ﺗﮭﺎ
ﺻﺒﺎﺣﺘﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺑﮩﻞ ﻧﮧ ﺟﺎﻧﺎ
ﻣﺠﮭﮯ ﮔﺮﺍ ﮐﮯ ﺳﻨﺒﮭﻞ ﻧﮧ ﺟﺎﻧﺎ
ﺑﺪﻟﺘﯽ ﺭﺕ ﻣﯿﮟ ﺑﺪﻝ ﻧﮧ ﺟﺎﻧﺎ
ﺑﮩﺖ ﮐﮩﺎ ﺗﮭﺎ
ﺑﮩﻞ ﮔﺌﮯ ﻧﺎ
ﮐﮩﺎ ﻧﮩﯿﮟ ﺗﮭﺎ
ﺳﻨﺒﮭﻞ ﮔﺌﮯ ﻧﺎ
ﻭﮨﯽ ﮨﻮﺍ ﻧﺎ
ﺑﺪﻝ ﮔﺌﮯ ﻧﺎ

Monday, 11 August 2014

Woh agar ab bhi koi ehad nibhana chahay وہ اگر اب بھی کوئی عہد نبھانا چاہے

وہ اگر اب بھی کوئی عہد نبھانا چاہے
دل کا دروازاہ کھُلا ہے جو وہ آنا چاہے

عین ممکن ہے اسے مجھ سے محبت ہی نہ ہو
دل بہر طور اسے اپنا بنانا چاہے

دن گزر جاتے ہیں قربت کے نئے رنگوں سے
رات پر رات ہے وہ خواب پرانا چاہے

اک نظر دیکھ مجھے !! میری عبادت کو دیکھ
بھول پائے گا اگر مجھ کو بھلانا چاہے؟

وہ خدا ہے تو بھلا اس سے شکایت کیسی؟
مقتدر ہے وہ ستم مجھ پہ جو ڈھانا چاہے

خون امڈ آیا عبارت میں، ورق چیخ اٹھے
میں نے وحشت میں ترے خط جو جلانا چاہے

نوچ ڈالوں گی اسے اب کے یہی سوچا ہے
گر مری آنکھ کوئی خواب سجانا چاہے

Tumhen khabar ho gi ﺗﻤﮩﯿﮟ ﺧﺒﺮ ﮨﻮﮔﯽ

ﺗﻤﮩﯿﮟ ﺧﺒﺮ ﮨﻮﮔﯽ
ﮐﮧ ﺩﺭﯾﺎ ﭘﺎﺱ ﺑﮩﺘﮯ ﮨﻮﮞ
ﺗﻮ ﭘﺎﻧﯽ ﺍﭼﮭﺎ ﻟﮕﺘﺎ ﮨﮯ
ﮐﻨﺎﺭﻭﮞ ﺳﮯ ﺟﮍﯼ
ﻣﭩﯽ ﺳﮯ ﭘﻮﭼﮭﻮ
ﺭﻭﮒ ﭼﺎﮨﺖ ﮐﺎ
ﮐﮧ ﭘﺎﻧﯽ ﮐﯽ ﭼﺎﮨﺖ ﻣﯿﮟ
ﮐﻨﺎﺭﻭﮞ ﺳﮯ ﺍﮐﮭﮍ ﮐﺮ
ﺍﺟﻨﺒﯽ ﺩﯾﺴﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺟﺎﻧﺎ
ﮐﺘﻨﺎ ﻣﺸﮑﻞ ﮨﮯ
ﮐﻨﺎﺭﺍ....... ﭘﮭﺮ ﻧﮩﯿﮟ ﻣﻠﺘﺎ
ﯾﮩﺎﮞ ﺟﻮ ﺑﮭﯽ ﺑﭽﮭﮍ ﺟﺎﮰ
ﺩﻭﺑﺎﺭﮦ..... ﭘﮭﺮ ﻧﮩﯿﮟ ﻣﻠﺘﺎ

Agarchay khoobsoorat hain teri yaaden اگر چہ خوبصورت ہیں تیری یادیں

اگر چہ خوبصورت ہیں تیری یادیں
مگر جاناں بہت تکلیف دیتی ہیں
سنو تم اپنی یادوں سے
ذرا یہ کیوں نہیں کہتے
کسی کی روح کا
آزار بن کے یوں
کسی الفت بھرے دل کو
جلایا تو نہیں کرتے
جو اجڑے لوگ ہوں ان کو
..ستایا تو نہیں کرتے

Sunday, 10 August 2014

Jab Sunta He Nahi

Jab Sunta He Nahi Wo Ham baat Kya Karen
Bewaja yahan us Se Sawalat Kya Karen
 
Usay Gila hai Ham Usay Yaad Nahe Krty
Bholty he Nahe Jo Unhy Yaad kya karen
 
Jab Saans Ka Aana He Dushwaar Ho Gya
Saqi Ayse Main Ham Ah-o-Pukar Kya Karen
 
Nazuk Dil Tha Apna Anjam-e-ishq Main Toot Gya
Kaise Howa Ye Hadsa Sar-e-aam Iqrar Kya Karen
 
Sab Kuch To Lut Gya Apna Ishq Wafa Main
Ab Tumhe Batao Gaye Maal Ka Hisaab Kya Karen
 
Ham Ne To Tarap Main Kaha Marr Gaye Touseef
Wo Ye Keh Kar Palat Gaye Ab Mulaqat Kya Karen

Tuesday, 5 August 2014

Mohabbat ab nahi ho gi

Sitaray Jo Damaktay Hain
Kisi Ki Chashm-E-Hairaan Main
Mulaaqatain Jo Hoti Hain
Jamal-E-Abr-O-Baraan Main
Yeh Na Abaad Waqton Main
Dil-E-Nashaad Main Ho Gi
Mohabbat Ab Nahi Ho Gi
Yeh Kuch Din Baad Main Ho Gi
Guzar Jaaein Gay Jab Yeh Din
Yeh Unki Yaad Main Ho Gi

Friday, 1 August 2014

ik pagal pagal si larki

ik pagal pagal si larki...

dil toornay se darti thi.......

har pal har lamha khud se woh jhagarti thi...

ansoo kiun aye kisi ankh

main mujrim khud ko samujhti thi...

ghuut ghuut k jeeti rehti thi...

har sans ulajhti rehti thi...


soo baar kaha aaay nadan larki..!!!

dunya ko dekhna choor day...

khud se ulajhna choor day...

pal pal bikherna choor day..

yahan HAASSASS DIl to koi nahi....

yahan NAZUKi say kaam na lay...

yahan pather banna parta hai...

yahan rehumdilli say kaam na lay...

soo barr kaha par kaisay nasamjhi....!!!

dunya ko sub samujhti thi...

phir wohi hoa jo hona tha.....

dil toota uska jiska ussay roona tha...

BHAROSAY ki deewar girri ...

SARD LEHJI haar baar mili....

phir simat gaye apni zaat main...

tamaam dukhon ko samaitay anchal main...

ankhon main jazbaat nahi..

pahlay say halaaat nahi...

Farq srif itna hoa...

khud apni zaaat ko TOOR dia...

tanhayeyoun se rishta jorr dia..

phir tanha tanha rehni lagi...

phir khud ko PATHEr kahnay lagi...

WOH IK PAGAL PAGAL SI LARKI....

JO DIL TOORNAY SE DARTI THI ......!!!!!!!!!!"

Mairey Kol

Mairey Kol

Waddiyaan Waddiyaan Gallaan Karan Lai

Bohta Sara Ilm Naeen..!

Mairey Kol

Zamaaney Noo Hairaan Karan Lai

Mushkil Mushkil Lafz Wee Naeen..!

Mairey Kol

Ik Nikka Jeya Dill Aye

Jis Wich

Wadey Waddey Dukh Rehndey Nay......!!!

Suno....

Suno....
 
Wohi soche wohi baate'n

wohi andaaz ab bhi hay

boht be'chain lagti hay

koi to raaz ab bhi hay

main kese uski yaado

or

waado'n se nigah phero'n

wo mujh se door rehne wali

meri hamraaz ab bhi hay

ye tum ho ...???

jo

is ta'aluq par paresha'n ho

magar is be'lous rishte pe

mujhe to naaz ab bhi hay...!!!

Hum Kaise Pagal Hotey Thay

Hum Kaise Pagal Hotey Thay"

Aik Phool Ko Chunay Ke Khaatir

Kaantoan Say Zakhmee Hotey Thay

Jo Phool Jhooli Main Aa Girtaa

Ussay Chunay Say Dar Jaatey Thay

Hum Kaise Pagal Hotey Thay



Kay Dhundalay Aaino Main Apna

Hum Aks Sa Dhoonda Kartey Thay

Aur Kirchiyaan Chataktay Aaino Ki

Muthi Main Daba Kar Rakhtey Thay

Hum Kaise Pagal Hotey Thay



Jab Sarak Per Chalna Hota Tha

Hum Kashti Lay Kar Chaltey Thay

Aur Beech Bawar Janay Ke Liye

Hum Pedal Nikla Kartey Thay

Hum Kaise Pagal Hotey Thay



Jab Pass Bohat Wo Hota Tha

Hum Us Ko Dekh Na Saktey Thay

Jab Dur Chala Jata Tha Wo

Hum Ahhat Us Ki Suntey Thay

Hum Kaise Pagal Hotey Thay



Jab Sari Duniya Soti Thi

Hum Chand Say Khaila Kartey Thay

Jab Sari Duniya Jaag Uthi

Hum Phir Thak Kar So Jatay Thay

Hum Kitney Pagal Hotey Thay

Hum Kaise Pagal Hotey Thay

Hum Aaj Bhi Waise Chanchal Hain

Hum Aaj Bhi Waise Pagal Hain

Tere Naam Ki Thee Jo Roshnee

Tere Naam Ki Thee Jo Roshnee

Ussay Khud Hee Tou Nay Bujhaa Diyaa

Na Jalaa Saki Jissay Dhoop Bhi

Ussay Chandni Nay Jala Diya



Main Hoon Gardishoo'n Main Ghiraa Hovaa

Mujhay Apnay Aap Ki Khabar Nahee'n

Woh Jo Shakhs Tha Mayraa Rehnumaa

Ussay Raastoo'n Main Ganwaa Diyaa



Jo Tayree Nazar Main Ajeeb Tha

Wohee Shakhs Tayraa Habib Tha

Tayray Haath Ki Woh Lakeer Thaa

Ussay Haath Say Hee Mitta Diyaa



Mujhay Ishq Hay Keh Junoo'n Hay

Abhi Faislaa Nahee'n Ho Sakaa

Mayraa Naam Zeenat-e-Dasht Thaa

Mujhay Aandhiyoo'n Nay Mitta Diyaa

Tuesday, 8 July 2014

Yeh jo saanp seerhi ka khel hai یہ جو سانپ سیڑھی کا کھیل ہے

یہ جو سانپ سیڑھی کا کھیل ہے
ابھی ساتھ تھے دونوں ہم نوا
وہ بھی ایک پہ
میں بھی ایک پہ
اُسے سیڑھی ملی وہ چڑھ گیا
مجھے راستے میں ًہی ڈس لیا
میرے بخت کے کسی سانپ نے
بڑی دور سے پڑا لوٹنا
زخم کھا کے اپنے نصیب کا
وہ ننانونے پہ پہنچ گیا
میں دس کے پھیر میں گھر گیا
اسے 1 نمبر تھا چاہے
جو نہیں ملا سو نہیں ملا
میں بڑھا تو بڑھتا چلا گیا
بس ایک چوکے کی بات تھی
پر اس سے جیتنا میری مات تھی
میں نے جان کے گوٹ غلط چلی
اور سانپ کے منہ میں ڈال دی
یہ جو پیار ہے ..
کبھی سوچنا ..
!!!__یہ بھی سانپ ____ سیڑھی کا کھیل ہے 

Side table pe chaey ka cup سائڈ ٹیبل پہ چائے کا کپ


سائڈ ٹیبل پہ چائے کا کپ
ہاتھ میں عشق پہ لکھی گئی ایک داستاں کی کتاب
اور دل یہ بھی چاہے کہ چھت پہ جا کے
رات کی تنہائی
چاند کی اداسی
اور لمحوں کی بےبسی کو
اپنے اندر اتار کے
..خود کو عشقِ لاحاصل میں قید کر لیا جائے 
اور ایسے میں کسی کی یاد نہ آئے۔

Mein jab bhi likhne bethta hon میں جب بھی لکھنے بیٹھتا ہوں

میں جب بھی لکھنے بیٹھتا ہوں
سب لفظ خفا ہو جاتے ہیں
ہر لفظ کی منت کرتا ہوں
جو حال بیاں دل کا کر دے
اس لفظ کا ہاتھ پکڑنے کو
میں اپنی سوچ کے صحرا میں
بس بس پاگل پاگل پھرتا ہوں
اور جب میں تھک سا جاتا ہوں
تب لفظوں کا اک جھرمٹ خود
اٹکھیلیاں کرتے آتا ہے
تب قلم کو جنبش دیتا ہوں
پھر یاد تیری کے جوبن کو
محسوس میں کرتا جاتا ہوں
اور لفظ میں لکھتا جاتا ہوں
یوں تیری یاد میں جان میری
!!!____میں نظمیں لکھتا رہتا ہوں

Jo mujh se pucha hai aj tum ne جومُجھ سے پوچھا ہے آج تم نے

جومُجھ سے پوچھا ہے آج تم نے
کہ میں تمہارا ہوں کیا، بتاو؟
توخود ہی سوچو۔۔۔ تم ایک پل کو
بھلا میں کیسے تمھیں بتاؤں؟
ہے تم سے میرا وہی تعلق
جو اپنے سائے سے ہے شجر کا
وہی جو خورشید سے قمرکا
گُلوں سے ہوتا ہے جومہک کا
کسی کی آنکھوں کے مست ڈوروں سے
اُسکے محبوب کی جھلک کا
میں ہوں بدن تو، تم اس کی جاں ہو
بہارموسم کے ترجماں ہو
لہو کے صورت مِری رگوں میں
ہرایک لمحے رواں دواں ہو
نماز ہوں میں ، تو تم اذاں ہو
مکین ہوں میں، توتم مکاں ہو
زمین ہوں میں، تم آسماں ہو
وہی تعلق ہے تم سے میرا
جودل سے ہوتا ہے دھڑکنوں کا
جوشاعروں سے ہے ماہ وشوں کا
جوحُسن والوں سے دل جلوں کا
ہے زُہد سے جوبھی زاہدوں کا
جو راستوں سے ہے منزلوں کا
جو منزلوں سے ہے رہبروں کا
ازٌل سے دھرتی سے پربتوں کا
وہی جوساگرسے ساحلوں کا
جو روح سے ہے کسی بدن کا
وہی جوچنداسے ہے کرن کا
جو باغباں سے کسی چمن کا
جو بارشوں کازمین سےہے
عبادتوں کاجبین سے ہے
وہی تعلق۔۔۔
ازٌل سے اپنے بھی درمیاں ہے
تمہی بہاروں کی دلکشی ہو
تمہی تو آنکھوں کی روشنی ہو
جوسچ کہوں، تم مِری خوشی ہو
تمہی اُجالا ، تمہی صبا ہو
تم آرزو ہو، تمہی وفا ہو
تمام جذبوں کی انتہا ہو
توکیوں نہ تم پریہ دل فداہو
بتاو جاناں !ہے اتناکافی ؟
کہ اورکچھ بھی تمہیں بتاؤں؟
جوہوسکے توخیال رکھنا
تمہارامُجھ سے وہی ہے رشتہ
ملائیکہ سے جوبندگی کا
جو مرنے والے سے زندگی کا
سمندروں کاجو سیپ سے ہے
وہی جو آنکھوں کادیپ سے ہے

Saanu Dukh Di Qeemat Da Ki Pata

"Saanu Dukh
Di Qeemat Da 
Ki Pata ...
¤BULLYA¤
Sanu Yaaran
Muft Jo De Dit'ty...!!

Youn mohabbat se na hum ko bula یوں محبت سے نہ ہم خانہ بدوشوں کو بلا

یوں محبت سے نہ ہم خانہ بدوشوں کو بلا
اتنے سادہ ہیں کے گھر بار اُٹھا لائیں گے

Youn mohabbat se na hum ko bula
Itnay saada hain ke ghar baar utha laein ge

Batao kon tha, kesa tha, jis se silsila thehra...? بتاؤ کون تھا ، کيسا تھا جس سے سلسلہ ٹھہرا...؟

بتاؤ کون تھا ، کيسا تھا جس سے سلسلہ ٹھہرا...؟
...کہا کر کے وفا کا خون آخر بے وفا ٹھہرا
بھلا پھولوں سے بھنورے کس زباں ميں بات کرتے ہيں...؟
...کہا، خوشبو سے خوشبو کا انوکھا رابطہ ٹھہرا
ذرا بتلاؤ اِک انجان پر اتني عنايت کيوں...؟
...کہا، دل کے صحيفے ميں يہي تو معجزہ ٹھہرا
سنو کيسا لگا اس شخص سے ملنا ، بچھڑ جانا..؟
...ملا تو اجنبي تھا وہ ، بچھڑ کر آشنا ٹھہرا
بھلا محبوب سو پردوں ميں بھي کيونکر نماياں ہے...؟
...ازل سے تا ابد دل کے ، وہ کعبے کا خدا ٹھہرا
پلٹ کر ہر طرف سے کيوں نظر اس شخص پر ٹھہري...؟
...وفا کے سلسلوں کي وہ ، مسلسل انتہا ٹھہرا

Monday, 2 June 2014

Bahot behiss c larki hai بہت بے حس سی لڑکی ھے

،​بہت بے حس سی لڑکی ھے
سدا خاموش رھتی ھے​
بہت کم مسکراتی ھے​

نمی آنکھوں میں رھتی ھے​

بہت سوچوں میں رھتی ھے​
بسی آنکھوں میں ویرانی​
چھپی چہر ے پہ حیرانی​
اگر کوئی جو کچھ پوچھے​
جوابی بات کہکر ۔ ۔ پھر​
یونہی خامو ش رھتی ھے​
بڑی بے حس سی لڑکی ھے​
خود ھی میں گم ھی رھتی ھے​
یہ کچھ مغرور لڑکی ھے ۔ ۔ ۔​
.....................​
یہ باتیں سنکے اس لڑکی کو​
پھر کچھ یاد آتا ھے ۔ ۔ ۔​
کبھی یہ لوگ کہتے تھے​
بڑی چنچل سی لڑکی ھے​
ھمیشہ مسکراتی ھے ۔ ۔​
اور اکثر گنگناتی ھے ۔​
چمکتا چاند سا چہرہ​
کھنکتا شو خ سالہجہ​
دیے جلتے ھیں آنکھوں میں​
بڑی شوخی ھے باتوں میں​
فضائیں دیکھ کر اسکو​
خوشی سے جھوم جاتی ھیں​
چمکتی رات اسکے نین میں​
سپنے جگاتی ھے ۔ ۔ ۔​
تمازت دھوپ کی چہر ے پہ اسکے​
گل کھلاتی ھے ۔ ۔ ۔​
کبھی بارش کے موسم میں​
سہانے کھیل کشتی کے​
کبھی گڑیوں کی شادی ھو​
کبھی گیتوں کی بازی ھو​
یہ ھر دم پیش رھتی ھے​
بڑی الہّڑ سی لڑکی ھے​
یہ کتنی شو خ لڑکی ھے ؟​
.............​
مگر اب لوگ کہتے ھیں ۔ ۔​
عجب بے حس سی لڑکی ھے​
بہت کم مسکراتی ھے ،​
سدا خاموش رھتی ھے​
..........​
انہیں معلوم کیسے ھو ؟​
وفا کے قید خانے میں ۔​
فرائض کے نبھانے میں​
جو لڑکی دار چڑھتی ھے​
جسے سپنوں کے بننے کی​
سزائیں وقت نے دی ھو ں ،​
جو رسموں اور رواجوں کے​
الاؤ میں سلگتی ھو ۔ ۔ ۔​
لبوں کی نوک پر جسکے ۔ ۔​
گلے بے جان ھوتے ھوں​
جسم کی قید میں ۔ ۔ ۔​
جب روح اکثر پھڑپھڑاتی ھو​
تو اک کمزور سی لڑکی ۔ ۔​
یونہی بے موت مرتی ھے​
تو پھر یوں لوگ کہتے ھیں ۔ ۔​
بہت سنجیدگی اوڑھے ۔ ۔​
عجب بے حس سی لڑکی ھے​
بہت کم مسکراتی ھے ۔ ۔​
سدا خاموش رھتی ھے

Aaj Wo Muddat Baad Aai Bhi

Aaj Wo Muddat Baad Aai Bhi

Bas Yeh Kehne

Janaa!

Mere Saare Khat Lauta Do

Sab Tasweeren, Qalam, Kitaaben

Wapis Kar Do Saare Tohfay

Mujh Se Sab Kuch Maangne Wali

Jate Jate

Mere Kamrey Ki Chokhat Par

Chor Gai Hai

“Apna Aap”

Saturday, 31 May 2014

Kitni nadan thi woh larki

KiTni NaDaN Thi WoO LaRki
Jo KhiYalooN Ki DuniYa MaY BasTi Thi
SooChoN KaY MaskaN MaY RehTi Thi
Wo WeRaaN YaDooN KaY DaMaN MaY BanDhi RehTi Thi

KiTni NaDaN Thi WoO LaRki
Jo KiTabooN MaY Gum RehTi Thi
AfsaNoo MaY Apna KirDar TalaShTi Thi
Kuch Na PaNaY Ki SooRaT MaY Udass Si Ho JaTi Thi

KiTni NaDaN Thi WoO LaRki
Jo ApNaY Hi KhiYaLooN MaY UlJhi UlJhi RehTi Thi
JaNeY KiYa SoochTi PaR KucH Bhi Na Keh PaTi Thi
DuniYa KaY HanGamOO SaY PaReY TanHaie MaY RehTi Thi

KiTni NaDaN Thi WoO LaRki
Jo ApNaY irD GirD Ki DuniYa SaY GhabRaie Hui RehTi Thi
AuR ApNaY WaJooD Ko KuD Hi DudsaFi DeNa ChahTi Thi
WoO Sab RasToon PaY JaTi Thi AuR Mur KaY WapaS AaTi Thi


KiTni NaDaN Thi WoO LaRki
Jo MeRaY DIL MaY RehTi Thi !

Suno Ye Daastan Apni

Suno Ye Daastan Apni, Mere Gurya K Wadon Ki
Muhabbat Thee Ussay Mujh Se, Ya Thee Woh Pagli Dewani?
Main Kaise Bhool Paonga, Lab-O-Rukhsar, Gaisoo Aur Woh Batain
Gawah Hain Aaj Bhe Koil, Darakht Aur Jheel Ka Paani…
Haqeeqat Thee Ya Ik Sapna, K Jab Woh Mujh Se Kehti Thee,
Jahan Per Koi Na Hoga, Tumhara Saath Main Dongi,
Kabhi Jab Tum Pukarogy, Tumhary Paas Aaonge,
Kahin Na Tum Bathak Jao, Tumhara Haath Thamongi,
Kisi Pal Door Jao Tu, Tumhari Raah Daikhongi,
Tumhary Raastoon Main, Apni Palkon Ko Bichaoongi,
Muhabbat Goud Main Bhar Kar, Tumhay Jhola Jhulaaongi…
Tumhary Aansoon Main Naachty Sub Ghum
Main Chupkay Se Chura Longi,
Tumhary Bheeghti Palkoon K Sub Moti,
Main Dil Main Jazb Kar Loongi
Tumhay Baanhon Main Bhar Kar
Sub Ghamoon Se Main Chupha Longi
Tumhary Lub…
Guloon Se Main Saja Doongi,
Tumhari Chahatoon K Aayenon Main, Shamayn Jala Dongi,
Tumhary Paanoon Main Kaanty Na Chub Jaayen
Khizan Ke Raakh Main Rasty Bana Dongi…
Main Sapno Se Saja Dongi, Tumhary Neend K Dar Ko,
Sitaroon Se Main Bhar Dongi, Sabhi Viraan Shamoon Ko,
Tumhary Kaanch K Ghar Ko Main Shabnam Ka Bana Dongi…
Main Saanson K Tapash Se Moom Kar Dongi, Tumhary Sird Jazboon Ko,
Tumhary Khaab Na Tooty, Main Saari Raat Jagongi…
Zara Tum Paas Tu Aao, Mera Ye Haath Tu Thaamo,
Pukaro Naam Ko Mere, In Aankhon Main Zara Jhaanko,
K Muddat Se Jo Ik Faryaad Main Doobi,
Tumhari Yaad K Sehraaon Main Darya Banati Hain,
Ye Gaisoo, Jo Hai Manand In Ghataaon K
Ye Lab, Jo Pankhree Ke Naazki Se Bhe Dilawar Hain,
Ye Tum Se Kuch Nahi Kehty, Sivaye Aik Jumlay K,
“Tumhara Saath Bus Ik Ho”, Tu Sub Manzoor Hai Mujh Ko…
Qasam Hai Mujh Ko Uss Rab Ke, Main Har Ik Dard Seh Longi,
Tumhary Saaye Main Jee Kar, Main Har Dukh Ko Bhula Dongi,
Tumhara Aastan Bus Ho, Kahin Na Tum Bichar Jaao,
Tumhe Tu Mery Sub Kuch Ho, Tumhary Waasty Main Kuch Bhe Kar Longi,
Wafa Gar Tum Karo Pori, Agar Wada Nibhao Tu….
Kisi Ne Gar Koi Patthar Uthaya Phir, Koi Bhe Rah Main Apni Jo Aaya Tu,
Main Phir Ik Hashr Kar Dongi, Ye Ghar Viraan Sub Hongy,
Agar Bus Main Howa Mery, Main Har Dar Ko Mita Dongi,
Mery Kiss Kaam Ke Dunya, Main Iss Ko He Jala Dongi.
Mere Gurya, Mere Gurya….
Kahan Hai Saath Woh Tera, Kahan Hai Haath Woh Tera?
Woh Palkain Kiss Ke Hain Ab, Kon Jholta Hai Tera Jhoola?
Woh Mouti Jazb Kar Lo Na, Woh Ghum Kab Tum Churaogi?
Woh Shamayn Kab Jalogi, Woh Rasty Kab Banaogi?
Mere Jazboon Ka Kya Hoga, Mere Sapno Ka Kya Hoga?
Wafa Tu Aaj Bhe Qaim Hai, Phir Qasmoon Ko Kion Toura…
Mere Dunya Jala Dali, Yeh Ghar Viraan Kar Dala...!

Tum Khud Socho

Kuch Roz Bohat Dil Tarpey Ga

Kuch Roz Rahein Gi Nam Aankhein

Kuch Roz rahey Gi Bechaini

Kuch Roz Yeh Seena Sulgey Ga

Pani Mein Safeena Sulgey Ga

Rafta Rafta .........

Dheerey Dheerey .......

Phir Haalat Hij'r Gazeeda ki

Ik Roz Sanbhal hi Jaye gi

Ik Zakh'm Bharey ga Chahat ka

Ik Dard Thamey Ga Shiddat ka

Ik Diya Bujhey Ga Qurbat ka

Lakin Kya Aisa Mumkin Hai ?

Tum Khud Socho

Kya Yeh Namumkin, Mumkin Hai ?

Tum Khud Socho !

Rukhsati

vo jo kah raha tha tum say
meri laadli behna..!

Zara hoslay say rehna
Tumhain hum say door ja kar

Koi dukh ho koi gham ho
Usko khush dili say sahna

Koi aisa din na aye
Kay Tumhari aankh nam ho

Tumhain yaad bhi na hoga
Meri Chaad jisii behna

Kay yeh baat kahtay kahtay
Koi khud say bhi ro raha tha...

Friday, 30 May 2014

Sochta Hun Ke Usay Nend Bhi Aati Hogi

Sochta Hun Ke Usay Nend Bhi Aati Hogi

Ya Meri Tarha Faqat Ashk Bahati Hogi

Wo Meri Shakal Mera Naam Bhulane Wali

Apni Tasweer Se Kiya Aankh Milati Hogi

Is Zameen Pe Bhi Hai Sailaab Mere Ashkon Se

Mere Maatam Ki Sada Arsh Hilaati Hogi

Sham Hote Hi Wo Chokhat Pe Jala Kar Shamein

Apni Palkon Pe Kai Khuwab Sulaati Hogi

Us Ne Silwa Bhi Liye Honge Siyah Rang Ke Libaas

Ab Moharram Ki Tarha Eid Manaati Hogi

Hoti Hogi Mere Bosay Ki Talab Mai Pagal

Jab Bhi Zulfon Mai Koi Phool Sajaati Hogi

Mere Taareek Zamanon Se Nikalne Wali

Roshni Tujh Ko Meri Yaad Dilaati Hogi

Dil Ki Masoom Ragein Khud Hi Sulagti Hongi

Jun Hi Tasweer Ka Kona Wo Jalaati Hogi

Roop De Kar Mujhe Is Mai Kisi Shehzaade Ka

Apne Bachon Ko Kahani Wo Sunaati Hogi

Thursday, 29 May 2014

Tab Our Ab

 Tab Our Ab

Kaha Us Ne
Mujhe Tab Waqye Tum Se Mohabbat Thi
Kaha Maine
Mujhe Tu Aj Bhi Tum Se Mohabbat Hai
Wo Tab Ki Baat Kerti Hai
Main Ab Ki Baat Kerta Hon
Magar Jo Fasla
Tab Our Ab Kay Darmiyan Hayel Hai
Wo Hum Se Tu Mil Ker Bhi Sameta Ja Nahi Sakta
Wo Ab Tak A Nahi Sakti
Main Tab Ko Pa Nahi Sakta

Tum Ne Dekha Hai Mujhe

Tum Ne Murjhaaye Hue Phool Kabhi Dekhe Hain

Dil Ki Qabron Pe Pare......

Hijr Ki Laash Ki Aankhon Pe Dhare

Tum Ne Uktaaye Hue Khuwab Kabhi Dekhe Hain

Dard Ki Palkon Se Lipte Hue

Ghabraaye Hue

Tum Ne Be-Chain Duaaen Kabhi Dekhi Hain

Mohabbat Ke Kinaaron Pe Bhatakti Phirti

Tum Ne Dekha Hai Mujhe

Kiya Kabhi Dekha Hai Mujhe

(Farhat Abbas Shah)

Wednesday, 28 May 2014

If you miss me

If you miss me just touch your heart 
and you will hear me, 
And if you really really miss me 
Just close your eyes and you will see me.

AiSa Koi t0 AaYa hY Teri ZinDaGi Mein

AiSa Koi t0 AaYa hY Teri ZinDaGi Mein..!!

Jo TjhY Meri YaaD Ka MoQa B Nahin Deta...

Bewafa Larka

Aye bewafa......!
itni baat to batlao mujh ko
woh jis ko aaj kal tum chahtay ho
jis ko apni Dilruba kehtay ho
kya woh bhi mere jaisi hai..
kya surkh rang
tumhain uss par bhi acha lagta hai.
uss k nain bhi kya
may khaanay k jaisay hain.
kya tum us ko bhi
apni jaan aur apna dil kehtay ho.

uss ki muskaan bhi kya tumhain
sehra mein sawan ki phuaar lagti hai.
uss k aansuo'n sey bhi kya
tumhari jaan jaati hai.
kya uss ko bhi tum
bohat intizaar karwatay ho, bohat satatay ho.
kya woh bhi meri tarah chup chaap
har dukh, tumhari har zyad-dti seh jaati hai.
uss k dil sey khail kar bhi kya
tumhain ik anjani sii khushi hoti hai.
aye meray harjaii...!

sirf itna kehna chahoon gi
mujh sey na sahi
uss sey zaroor wafa karna
apnay sachay pyar ki intiha karna
meray jaisi ik aur bad qismat larki ka
iss duniya mein izaafa naa karna
ho sakay to aisa karna.

Dukh sulag kar bolty hain

Dukh Sulag Kar Boltey Hain

Raat Ke Pichley Pehar Ho Aisey
Dil Pe Taari Purani Yadon Se
Kuch Anmol Purani Yadon Se
Dukh Sukh Bhari Baton Se
Zakham Gehray Hotey Hain
Nainaan Ashk Ph ir Roltay Hain
Dukh Sulag Kar Boltay Hain

Poet...Ghazala Mashal

Mery sathi mery hamdam

Mery Sathi Mery Hamdam
Meri Ye Ilteja Sun Lo
Agr Majboor Ho Jao
Thakan Se Choor Ho Jao
Juda Hona Jo Chaho Aur
Tumhen Jana Zaruri Ho
To Bus Chup Chaap Chal Dena
Aur Apni Raah Ho Lena
Suno......!
Apna Bharam Rakhna 
Mujhey Awaz Mat Dena
Tery Qadmon Ki Aahat Par
Mein Khud He Loat Aaon Gi.......

Poet......
Farha ALi _Karachi

Sunday, 25 May 2014

Mujh se bichri to door hat ke roi ﻣﺠـﮫ ﺳـﮯ ﺑﭽﮭـﺮﯼ ﺗـﻮ ﺩﻭﺭ ﮨﭧ ﮐـﮯ ﺭﻭﺋـﯽ

،ﻣﺠـﮫ ﺳـﮯ ﺑﭽﮭـﺮﯼ ﺗـﻮ ﺩﻭﺭ ﮨﭧ ﮐـﮯ ﺭﻭﺋـﯽ
  ،ﻧﺎ ﺟﺎﻧـﮯ ﮐـﯿﻮﮞ ﻭﮦ ﺍﭘﻨﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﭘﻠﭧ ﮐـﺮﺭﻭﺋـﯽ
  ،ﯾﺎﺩ ﺁﺋـﯽ ﺍﺱ ﮐـﻮ ﺟﺐ ﻣﯿـﺮﯼ ﺑـﺎﺗﯿﮟ
  ،ﭘﮕﻠـﯽ ﻣـﯿﺮﯼ ﻧﺸﺎﻧـﯽ ﺳـﮯ ﻟﭙﭧ ﮐـﮯ ﺭﻭﺋـﯽ
  ،ﺳﻨـﺎ ﮨـﮯ ﻣﮩﻨﺪﯼ ﻟـﮕﺎ ﮐﺮ ﺍﭘﻨﮯ ﺣَﺴِـﯿﻦ ﮨﺎﺗـﮭﻮﮞﭘﺮ ﻧـﺎﻡ ﻣﯿﺮﺍ ﻟﮑﮫ ﮐـﺮ
  ،ﺳﮩﻠﯿـﻮﮞ ﮐـﮯ ﺑـﮭﺮﮮ ﺟﮭﺮﻣﭧ ﻣﯿﮟ ﺭﻭﺋـﯽ 
 ،ﻭﮦ ﻣﯿـﺮﯼ ﯾﺎﺩﻭﮞ ﻣﯿﮟ ﺧﻮﺵ ﺭﮨﻨـﮯ ﻭﺍﻟـﯽ
  ،ﮐﻞ ﮐﺴـﯽ ﮐـﮯ ﺑﺎﺯﻭﮞ ﻣﯿـﮟ ﺳـﻤﭧ ﮐﮯ ﺭﻭﺋـﯽ
  ،ﺟﺐ ﮨَﻢ ﺳﺎ ﮨـﻤﺪﺭﺩ ﺍﺱ ﮐﻮ ﻧﮧ ﻣﻼ ﺗـﻮ 
 ،ﻣﮩـﻨـﺪﯼ ﮐـﮯ ﺩﻥ ﺑﮭـﯽ ﺩﺭﻭﺍﺯﮮ ﺳــﮯ ﻟﭙـﭧ ﮐـﮯﺭﻭﺋـﯽ

Jo Rukay To Koh-e-Giraan Thay Hum

Tujhay Kya Khabar Meray Haal Ki,
Meray Dard Or Malaal Ki,

Yeh Meray Khayaal Ka Silslaa,
Kisi Yaad Say Hay Milaa Huwa,

Usay Dekhna,Usay Sochna,
Meri Zindagi Ka Hay Faisla,

Ye Uski Palkon K Saaye Hain,
Meri Rooh Mein Jo Utar Gaye,

Ye Janoon-e-Manzil-e-Ishq Hay,
Jo Chalay To Jaan Say Guzar Gaye,

Mujhay Is Muqaam Pay Chorrna,
Hay Ye Bewafaai Ki Inteha,

Ye Qafas Ho Jaisay Koi Sazaa,
Yaheen Sukh Ka Saans Main Loon Sadaa,

Jinhain Teri Deed Ki Piyaas Thi,
Wo Qatray Nainon Say Beh Gaye,

Jo Rukay To Koh-e-Giraan Thay Hum,
Jo Chalay To Jaan Say Guzar Gaye...

Saturday, 24 May 2014

Marti hui zameen ko bachana para mujhe مرتی ہوئی زمیں کو بچانا پڑا مجھے


مرتی ہوئی زمیں کو بچانا پڑا مجھے
بادل کی طرح دشت میں آنا پڑا مجھے

وہ کر نہیں‌ رہا تھا مری بات کا یقیں
پھر یوں ہوا کہ مر کے دکھانا پڑا مجھے

بھولے سے میری سمت کوئی دیکھتا نہ تھا
چہرے پہ ایک زخم لگانا پڑا مجھے

اس اجنبی سے ہاتھ ملانے کے واسطے
محفل میں سب سے ہاتھ ملانا پڑا مجھے

یادیں تھیں دفن ایسی کہ بعد از فروخت بھی
اس گھر کی دیکھ بھال کو جانا پڑا مجھے

اس بے وفا کی یاد دلاتا تھا بار بار
کل آئینے پہ ہاتھ اٹھانا پڑا مجھے

ایسے بچھڑ کے اس نے تو مر جانا تھا حسن
اس کی نظر میں خود کو گرانا پڑا مجھے

Kaho tumhein koi farq parta hai کہو ۔۔ تمہیں کوئی فرق پڑتا ہے

!کہو ۔۔
تمہیں کوئی فرق پڑتا ہے
میرے ہونے نہ ہونے سے؟
میرے ہنسنے سے، رونے سے؟
میرے لفظوں سے یا پھر
میرے بہت .. خاموش ہونے سے؟
تمہارے پاس ہونے سے
یا تم سے دور ہونے سے؟

کہو

تمہارے دل پر کیا میرا کوئی اشک گرتا ہے؟
میرا خیال تمہیں لئے کبھی آوارہ پھرتا ہے؟
تصور کے پردوں میں میرا کوئی عکس ابھرتا ہے؟
جیسے تم مجھ میں رہتے ہو تم میں کوئی شخص رہتا ہے؟

کہو

ہماری کسی یاد پر تمہاری نظر جب ٹھہرتی ہے؟
کیا بڑ ے حوصلے، بڑی مشکل سے پلٹتی ہے؟
کیا خوشبو میری کوئی تم میں جا سمٹتی ہے؟
میری یاد تمہارے دل میں کبھی بیحد مچلتی ہے؟

کہو

کوئی دھیان میرا یک لخت تمہاری جلوت خلوت بناتا ہے؟
میرا کوئی نقش تمہاری روح میں کیا کبھی جھلملاتا ہے؟
کبھی رستوں پر چلنے پر کیا میرا سایہ ساتھ چلتا ہے؟
کبھی گرنے کو ہو تو اچانک کوئی ہاتھ آ پکڑتا ہے؟

کہو

کیا تمہیں میری کبھی یاد آتی ہے؟
اور آتی ہے تو کیا بہت زیادہ ستاتی ہے؟
کیا چاندنی میرا کوئی پیغام لاتی ہے؟
بارش تمہیں بھی کیا میرا احساس دلاتی ہے؟

- کہو

میری ان کہی ساری تمہارے گوش گزرتی ہے؟
جو وحی میرے دل پر اترتی ہے
کیا تمہارے دل پر اترتی ہے؟
کیا میری یہ خاموش سی گفتگو
تمہارے دل سے ہو کر گزرتی ہے

کہو

کبھی باتوں ہی باتوں میں تمہارا ربط ٹوٹا ہے
بہت ضبط کرتے کرتے کیا کبھی ضبط ٹوٹا ہے ؟
کوئی اپنا بہت اپنا کیا تم سے ایسے روٹھا ہے؟
خواب آنکھوں نے بنا، کیا پلکوں میں ٹوٹا ہے؟

کہو.. آج کچھ کہہ دو
ہیں منتظر سماعتیں میری
کہو ناں آج کچھ کہہ دو
لرزاں ہیں دھڑکنیں میری

مگر .. دیکھو ناں
ہم بھی نادان ہیں کتنے
ہاں تم کو خبر ہو کیسے
یہ سوال تو سارے
!ہم اپنے دل میں کرتے ہیں
یہ قیاس تو سارے
!ہم اپنے دل میں رکھتے ہیں

سنو! ایک بات یہ بھی ہے
کبھی تم اگر جانو
یہ سب جو ہم نے کہا

Me b tumhen aksar yuhi takta rehta hu

Jaisy nangy paaon ...
Phatty purane kapron wale bache
apni khali jaibon ka ehsas liye
dil ko achi lagne wali , mehngi chezien .....
Kisi dukan k band sheshon se takte h na .....

Me b tumhen aksar yuhi takta rehta hu ...

Friday, 23 May 2014

Aey dekhnay walo mujhey mur mur ke na dekho ﺍﮮ ﺩﯾﮑﮭﻨﮯ ﻭﺍﻟﻮ ! ﻣﺠﮭﮯ ﻣُﮍ ﻣُﮍ ﮐﮯ ﻧﮧ ﺩﯾﮑﮭﻮ

ﺍﮮ ﺩﯾﮑﮭﻨﮯ ﻭﺍﻟﻮ ! ﻣﺠﮭﮯ ﻣُﮍ ﻣُﮍ ﮐﮯ ﻧﮧ ﺩﯾﮑﮭﻮ
 
ﺗﻢ ﮐﻮ ﺑﮭﯽ ﻣﺤّﺒﺖ ﮐﮩﯿﮟ ﻣﺠﮫ ﺳﺎ ﻧﮧ ﺑﻨﺎ ﺩﮮ

Aey dekhnay walo mujhey mur mur ke na dekho

Tum ko bhi mohabbat kahen mujh sa na bna de

Tumhen kis ne kaha tha

TuMHeN KIs Ny KaHa THa...?

DopEhar k GarM SuraJ ki TaraF DekhO,
Or Itni DeR Tak DekhO,
k BinAyi PiGhaL jayE,

TuMHeN KIs Ny KAhA ThA...?

AsMan Sy ToOt'Ti AnDhi uLajhTi BijLiyOn Sy
DosTi kaR Lo,
Or ItNi DosTi kaR Lo
k GhaR Ka GhAr He jaL jayE,

TuMhEN KIs Ny KaHa THa...?

Ik AnjaAnY SafaR mEin,
Ik AjnaBi k HamRaH DoOr tak jaO,
Or ItNi DoOr tAk jaO,
k Wo RasTa BadaL jayE,

TuMhEN KiS Ny KAHa ThA..??

Hamari chahat ka lamha lamha, wisaal hota kamal hota ﮨﻤﺎﺭﯼ ﭼﺎﮨﺖ ﮐﺎ ﻟﻤﺤﮧ ﻟﻤﺤﮧ، ﻭﺻﺎﻝ ﮨﻮﺗﺎ، ﮐﻤﺎﻝ ﮨﻮﺗﺎ

ﮨﻤﺎﺭﯼ ﭼﺎﮨﺖ ﮐﺎ ﻟﻤﺤﮧ ﻟﻤﺤﮧ، ﻭﺻﺎﻝ ﮨﻮﺗﺎ، ﮐﻤﺎﻝ ﮨﻮﺗﺎ
ﺗﻤﮩﺎﺭﺍ ﮨﻢ ﺳﮯ ﭘﭽﮭﮍﻧﺎ ﭘﻞ ﺑﮭﺮ، ﻣﺤﺎﻝ ﮨﻮﺗﺎ، ﮐﻤﺎﻝ ﮨﻮﺗﺎ

ﮨﻮﺍ ﮐﯽ ﻟﮩﺮﻭﮞ ﭘﮧ ﮈﻭﻟﺘﮯ ﮐﭽﮫ، ﺧﺰﺍﮞ ﺭﺳﯿﺪﮦ ﯾﮧ ﺯﺭﺩ ﭘﺘﮯ
ﮐﺴﯽ ﮐﯽ ﭼﺎﮨﺖ ﻣﯿﮟ ﺑﮭﯽ ﺗﯿﺮﺍ ﮔﺮ، ﯾﮧﺣﺎﻝ ﮨﻮﺗﺎ، ﮐﻤﺎﻝ ﮨﻮﺗﺎ

ﺗﺠﮭﮯ ﺟﻮ ﻣﻌﻠﻮﻡ ﮨﻮﺗﮯ ﺟﺎﻧﺎﮞ۔۔ ﻭﻓﺎ ﮐﮯ ﺭﺳﻢ ﻭ ﺭﻭﺍﺝ ﺳﺎﺭﮮ
ﻣﺤﺒﺘﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﮨﻤﺎﺭﺍ ﻗﺼﮧ، ﻣﺜﺎﻝ ﮨﻮﺗﺎ،ﮐﻤﺎﻝ ﮨﻮﺗﺎ

ﻣﯿﺮﯼ ﻧﻈﺮ ﻣﯿﮟ ﺗﯿﺮﺍ ﺳﺮﺍﭘﺎ، ﺳﻨﻮﺭ ﺭﮨﺎ ﺟﺲ ﻃﺮﺡ ﺳﮯ ﺟﺎﻧﺎﮞ
ﺗﯿﺮﯼ ﻧﻈﺮ ﻣﯿﮟ ﺑﮭﯽ ﮔﺮ ﻣﯿﺮﺍ ﯾﮧ، ﺟﻤﺎﻝ ﮨﻮﺗﺎ، ﮐﻤﺎﻝ ﮨﻮﺗﺎ

ﯾﮧ ﺭُﺕ ﺧﺰﺍﮞ ﮐﯽ ﯾﮧ ﺷﺎﻡ ﮐﺎ ﭘﻞ، ﯾﮧ ﺗﯿﺮﯼ ﯾﺎﺩﯾﮟ ﯾﮧ ﻣﯿﺮﮮ ﺁﻧﺴﻮ
ﺗﻤﮩﺎﺭﯼ ﻓﺮﻗﺖ ﮐﺎ ﮔﺮ ﮐﺒﮭﯽ ﻧﮧ، ﯾﮧ ﺟﺎﻝ ﮨﻮﺗﺎ، ﮐﻤﺎﻝ ﮨﻮﺗﺎ

Suno! Ae Mom Ki Gurya

Suno!
Ae Mom Ki Gurya,
Ab Is Dour K Andar,

Koi Majnu Nahi Banta,
Koi Ranjha Ni Banta,
Qadam Do-Char Chalne Se,
Safar Sanjha Ni Hota,

To In Bekar Sochon Pe,
Suno! Rone ka Dar Kesa?
Jisse Paya Ni Tum Ne..
Usse Khone Ka Dar Kesa?

Larkian bhi ajab hoti hain ﻟﮍﮐﯿﺎﮞ ﺑﮭﯽ ﻋﺠﺐ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﯿﮟ

ﻟﮍﮐﯿﺎﮞ ﺑﮭﯽ ﻋﺠﺐ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﯿﮟ
,ﺍﻥ ﮐﮩﯽ ﺑﺎﺗﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺩﺍﺳﺘﺎﻧﯿﮟ ﮈﮬﻮﻧﮉ. ﻟﯿﺘﯽ ﮨﯿﮟ
ﺍﯾﮏ ﻣﺴﮑﺮﺍﮨﭧ ﮐﻮ ﺍﺛﺎﺛﮧﺀﺣﯿﺎﺕ ﺳﻤﺠﮫ ﻟﯿﮟ ﮔﯽ
ﮨﯿﮟ ﻋﺎﺩﺗﯿﮟ ﻋﺠﺐ ﺍﻥ ﮐﯽ
ﺑﮯ ﻣﻌﻨﯽ ﺟﻤﻠﮯ ﮐﮯ ﻣﻌﻨﯽ ﮐﻮ ﺍﺧﺬ ﮐﺮﻧﮯ ﻣﯿﮟ
ﺭﺍﺕ ﮐﻮ ﺑﺘﺎ ﺩﯾﻨﺎ
ﺑﺎﺭﺵ ﮐﮯ ﺍﯾﮏ ﻗﻄﺮﮮ ﺳﮯ ﻗﻮﺱ ﻗﺰﺡ ﺑﻨﺎ ﻟﯿﻨﺎ
ﺫﺭﺍ ﺟﮭﻨﺠﮭﻼﯾﮯ ﻟﮩﺠﮯ ﭘﺮ ﭨﻮﭦ ﮐﺮ ﺑﮑﮭﺮ ﺟﺎﻧﺎ
ﺳﻮﻧﮯ ﮐﯽ ﺍﺩﺍﮐﺎﺭﯼ ﻣﯿﮟ ﺗﮑﯿﮯ ﺑﮭﮕﻮ ﺩﯾﻨﺎ ﭨﻮﭨﺘﮯ ﺧﻮﺍﺏ ﮐﻮ ﺧﻮﺵ ﮔﻤﺎﻧﯿﻮﮞ ﺳﮯ ﺳﺠﺎ ﺩﯾﻨﺎ
___ﭘﮭﺮ
ﺍﯾﮏ ﻣﺴﮑﺮﺍﮨﭧ ﭘﺮ ﺳﺐ ﺗﻠﺨﯿﺎﮞ ﺑﮭﻼ ﺩﯾﻨﺎ
ﺍﻣﯿﺪ ﻧﺌﯽ ﭘﮭﺮ ﺟﮕﺎ ﻟﯿﻨﺎ
ﺍﻭﺭ ﮐﮭﻞ ﮐﮯ ﻣﺴﮑﺮﺍ ﺩﯾﻨﺎ
ﮨﯿﮟ ﭼﺎﮨﺘﯿﮟ ﻋﺠﺐ ﺍﻥ ﮐﯽ
ﺫﺍﺕ ﺍﭘﻨﯽ ﺑﮭﻼ ﺩﯾﮟ ﮔﯽ
ﺩﻋﺎ ﻣﯿﮟ ﮨﺎﺗﮫ ﺟﺐ ﺍﭨﮭﺎﯾﮟ ﮔﯽ ﺭﻭﺭﻭ ﮐﺮ ﮐﺒﮭﯽ ﻣﺎﻧﮕﯿﮟ ﮔﯽ ﮐﺒﮭﯽ ﮐﺒﮭﯽ ﻣﺎﻧﮓ ﻣﺎﻧﮓ ﮐﺮ ﺭﻭ ﺩﯾﮟ ﮔﯽ ﺍﭘﻨﯽ ﻋﻤﺮ ﮐﮯ ﺳﺐ ﻟﻤﺤﮯ
ﺍﭘﻨﮯ ﭘﯿﺎﺭﻭﮞ ﮐﻮ ﺩﺍﻥ ﺩﯾﻨﮯ ﮐﯽ ﺩﻋﺎﺋﯿﮟ ﮨﯿﮟ ﻋﺠﺐ ﺍﻥ ﮐﯽ
ﺳﺘﻢ ﺳﺎﺭﮮ ﺧﻮﺩ ﭘﺮ ﺟﮭﯿﻞ ﻟﯿﻨﮯ ﮐﯽ ﺁﻧﺴﻮ ﺳﺐ ﭼﮭﭙﺎ ﮐﺮ ﻣﺴﮑﺮﺍﻧﮯ ﮐﯽ ﮨﯿﮟ ﺭﺍﺣﺘﯿﮟ ﻋﺠﺐ ﺍﻥ ﮐﯽ
ﺍﮎ ﺍﺟﻨﺒﯽ ﺳﺎﺗﮭﯽ ﮐﻮ ﺍﭘﻨﺎ ﻣﺎﻥ ﻟﯿﻨﮯ ﮐﯽ ﺷﺮﯾﮏ ﺭﻭﺡ ﺑﻨﺎﻧﮯ ﮐﯽ
ﭘﮭﺮ ﻣﺮ ﮐﮯ ﺑﮭﯽ ﻧﺒﮭﺎﻧﮯ ﮐﯽ
ﮨﯿﮟ ﺧﻮﺍﮨﺸﯿﮟ ﻋﺠﺐ ﺍﻥ ﮐﯽ
!.............ﺳﭻ ﮐﮩﺎ
ﺳﻤﺠﮫ ﺳﮯ ﺑﺎﮨﺮ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﯿﮟ
ﯾﮧ ﻟﮍﮐﯿﺎﮞ ﺑﮭﯽ ﻋﺠﺐ ﮨﻮﺗﯽ ھیں۔ــــــــــ

!!!

Roshni Ki Dhaar Par Rakhi Kahani Aur Dukh ﺭﻭﺷﻨﯽ ﮐﯽ ﺩﮬﺎﺭ ﭘﺮ ﺭﮐﮭﯽ ﮐﮩﺎﻧﯽ، ﺍﻭﺭ دُﮐﮫ

ﺭﻭﺷﻨﯽ ﮐﯽ ﺩﮬﺎﺭ ﭘﺮ ﺭﮐﮭﯽ ﮐﮩﺎﻧﯽ، ﺍﻭﺭ دُﮐﮫ
ﺁﻧﮑﮫ ﺳﮯ ﺑﮩﺘﺎ ﮨﻮﺍ ﺧﺎﻣﻮﺵ ﭘﺎﻧﯽ، ﺍﻭﺭ دُﮐﮫ

ﻣﯿﺮﮮ ﮐﻤﺮﮮ ﻣﯿﮟ اُﺳﯽ ﺗﺮﺗﯿﺐ ﺳﮯ ﺭﮐﮭﮯ ﮨﻮئے
ﭘﮭﻮﻝ، ﺧﻂ، ﻭﻋﺪﮮ، ﺩﻻﺳﮯ، ﺍﮎ ﺟﻮﺍﻧﯽ، ﺍﻭﺭدُﮐﮫ

اِﮎ ﺩﻭﺟﮯ ﺳﮯ ﺑﭽﮭﮍ ﮐﺮ ﻋﻤﺮ ﺑﮭﺮ ﺭﻭﺗﮯ ﺭﮨﮯ
ﺭﺍﺕ، ﺻﺤﺮﺍ، ﺧﺸﮏ ﭘﺘﮯ، ﺍﮎ ﺭﺍﻧﯽ، ﺍﻭﺭ دُﮐﮫ

ﺍﺏ ﻣﯿﺮﮮ ﻟﻔﻈﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﻭﮦ ﭘﮩﻠﮯ ﺳﯽ ﮐﯿﻔﯿﺖ ﻧﮩﯿﮟ
ﮈﺍﻝ ﺍﺏ ﺟﮭﻮﻟﯽ ﻣﯿﮟ، ﺗﯿﺮﯼ ﻣﮩﺮﺑﺎﻧﯽ ﺍﻭﺭ دُﮐﮫ

ﺭﺍﺕ ﺻﺤﺮﺍ ﻣﯿﮟ ﮐﺴﯽ ﻧﮯ ﺑﺎﻧﺴﺮﯼ ﮐﯽ ﮨﻮﮎ ﭘﺮ
ﺭﮐﮫ ﺩﯾﮟ ﭘﮭﺮ ﺭﻭﺗﯽ ﮨﻮﺋﯽ ﯾﺎﺩﯾﮟ ﭘﺮﺍﻧﯽ، ﺍﻭﺭ دُﮐﮫ

Roshni Ki Dhaar Par Rakhi Kahani Aur Dukh
Aankh Se Behta Huwa Khamosh Pani Aur Dukh

Mere Kamre Mein Usi Tarteeb Se Rakhe Huwe
Phool Khat Wade Dilase Ik Jawani Aur Dukh

Ek Dooje Se Bichar Kar Umar Bhar Rote Rahe
Raat Sehra Khushk Patte Ek Raani Aur Dukh

Ab Mere Lafzon Mein Wo Pehle Si Kefiyat Nahi
Daal Ab Jholi Mein Teri Mehrbani Aur Dukh

Raat Sehra Mein Kisi Ne Bansuri Ki Hook Par....
Rakh Dien Phir Roti Huwi Yaden Purani Aur Dukh.

Monday, 19 May 2014

Aik Kamra e imtehaan mein ایک کمرہٴ امتحان میں

ایک کمرہٴ امتحان میںز
بے نگاہ آنکھوں سے دیکھتے ہیں پرچے کو
بےخیال ہاتھوں سے
ان بنے سے لفظوں پر، انگلیاں گھماتے ہیں
یا سوال نامے کو دیکھتے ہی جاتے ھیں
ھر طرف کن انکھیوں سے بچ بچا کے تکتے ہیں
دوسروں کے پرچوں کو رہنما سمجھتے ہیں
شاید اسطرح کوئی راستہ ہی مل جاٴے
بے نشاں جوابوں کا،کچھ پتا ہی مل جاٴے
مجھ کو دیکھتے ھیں تو
یوں جواب کاپی پر ،حاشیے لگاتے ھیں
دائرے بناتے ھیں
جیسے انکو پرچے کے سب جواب آتے ھیں
اس طرح کے منظر میں
امتحان گاہوں میں دیکھتا ھی رہتا تھا
نقل کرنے والوں کے
نت نئے طریقوں سے
آپ لطف لیتا تھا، دوستوں سے کہتا تھا!
کس طرف سے جانے یہ
آج دل کے آنگن میں اک خیال آیا ہے
سینکڑوں سوالوں سا اک سوال لایا ہے
وقت کی عدالت میں
زندگی کی صورت میں
یہ جو تیرے ہاتھوں میں، اک سوال نامہ ہے
کس نے یہ بنایا ہے
کس لئے بنایا ہے
کچھ سمجھ میں آیا ہے؟
زندگی کے پرچے کے
سب سوال لازم ھیں سب سوال مشکل ھیں!
بے نگاہ آنکھوں سے دیکھتا ہوں پرچے کو
بے خیال ہاتھوں سے
ان بنے سے لفظوں پر انگلیاں گھماتا ہوں
حاشیے لگاتا ہوں
دائرے بناتا ہوں
یا سوال نامے کو
دیکھتا ہی جاتا ہوں

Tum Sache Bar Haq Saaein تم سچے برحق سائیں

تم سچے برحق سائیں
سر سے لیکر پیروں تک
دنیا شک ہی شک سائیں
تم سچے برحق سائیں
اک بہتی ریت کی دہشت ہے
اور ریزہ ریزہ خواب مرے
بس ایک مسلسل حیرت ہے
کیا ساحل ، کیا گرداب مرے
اس بہتی ریت کے دریا پار
کیا جانے ہیں کیا کیا اسرار
تم آقا چاروں طرفوں کے
اور مرے چار طرف دیوار
اس دھرتی سے افلاک تلک
تم داتا، تم ہو پالن ہار
میں گلیوں کا ککھ سائیں
تم سچے برحق سائیں
سر سے لیکر پیروں تک
دنیا شک ہی شک سائیں
کچھ بھید ازل سے پہلے کا
کچھ راز ابد کی آنکھوں کے
کچھ حصہ ہجر سراپے کا
کچھ بھیگے موسم خوابوں کے
کوئی چارہ مری پستی کا
کوئی دارُو آنکھ ترستی کا
بس ایک نظر سے جُڑ جائے
آئینہ مری ہستی کا
ازلوں سے راہیں تکتا ہے
اک موسم دل کی بستی کا
اس کی اور بھی تَک سائیں
تم سچے برحق سائیں
سر سے لیکر پیروں تک
دنیا شک ہی شک سائیں
تم سچے برحق سائیں
میں ایک بھکاری لفظوں کا
یہ کاغذ ہیں کشکول مرے
ہیں ملبہ زخمی خوابوں کا
یہ رستہ بھٹکے بول مرے
یہ ارض و سما کی پہنائی
یہ مری ادھوری بینائی
کیا دیکھوں ، کیسے دیکھ سکوں
یہ ہجر کی جلوہ آرائی
یہ رستہ کالے کوسوں کا
اور اک مسلسل تنہائی
مانگوں اک جھلک سائیں
تم سچے برحق سائیں
سر سے لیکر پیروں تک
دنیا شک ہی شک سائیں
تم سچے برحق سائیں

Maar Deta Hai Teri Bat Ka Dukh مار دیتا یے تیری بات کا دکھ

درد دیتی ہے تیری خاموشی
 
مار دیتا یے تیری بات کا دکھ

Dard Deti Hai Teri Khamoshi

Maar Deta Hai Teri Bat Ka Dukh

Saturday, 17 May 2014

ﯾﺎﺩ ﺁﺋﮯ ﮨﯿﮟ___ ﻣﺤﺴﻦؔ ﮐﯿﺎ ﮐﯿﺎ ﻟﻮﮒ ﻣﺠﮭﮯ

ﺩﺭﺩ ﮐﺎ ﺟﻨﮕﻞ___ ﺍَﭨﺎ ﮨﻮُﺍ ﮨﮯ ﺳﺎﻧﭙﻮﮞ ﺳﮯ
ﺩِﻝ ﮐﺎ ﺟﻮﮔﯽ ﺭﻭﺯ ﺳِﮑﮭﺎﺋﮯ ﺟﻮﮒ ﻣﺠﮭﮯ

ﮐﻞ ﺷﺐ ﺍُﺟﻠﮯ ﭼﮩﺮﻭﮞ ﮐﯽ ﺍِﮎ ﻣﺤﻔﻞ ﻣﯿﮟ
ﯾﺎﺩ ﺁﺋﮯ ﮨﯿﮟ___ ﻣﺤﺴﻦؔ ﮐﯿﺎ ﮐﯿﺎ ﻟﻮﮒ ﻣﺠﮭﮯ 

Monday, 12 May 2014

Wo kaha karta tha

Wo kaha karta tha
Jab
Mein tujhy bhoolunga
To wo din zindagi ka
Akhri din ho ga
Us raat taaray
Na chamkaingy
Us subha
Suraj na
Nikley ga
Wo kaha karta tha
Meri har
Saans se
Tu wabasta hai
Aaj jab us
Ne rasta badla
Tou
Yaad aya
Wo kaha karta tha

Sunday, 11 May 2014

kuch yad rahi kuch bhool gaey کُچھ یاد رہی کُچھ بُھول گئے


رُودادِ محبّت کیا کہیے کُچھ یاد رہی کُچھ بُھول گئے
دو دِن کی مُسرّت کیا کہیے کُچھ یاد رہی کُچھ بُھول گئے

جب جام دیا تھا ساقی نے جب دور چلا تھا محفل میں
اِک ہوش کی ساعت کیا کہئیے کُچھ یاد رہی کُچھ بھول گیے

اب وقت کے نازک ہونٹوں پر مجروح ترنّم رقصاں ہے
بیدادِ مشیّت کیا کہئیے کُچھ یاد رہی کُچھ بُھول گئے

احساس کے میخانے میں کہاں اَب فکر و نظر کی قندیلیں
آلام کی شِدّت کیا کہئیے کُچھ یاد رہی کُچھ بھول گئے

کُچھ حال کے اندھے ساتھی تھے کُچھ ماضی کے عیّار سجن
احباب کی چاہت کیا کہئیے کُچھ یاد رہی کُچھ بھول گئے

کانٹوں سے بھرا ہے دامنِ دِل شبنم سے سُلگتی ہیں پلکیں
پُھولوں کی سخاوت کیا کہئیے کُچھ یاد رہی کُچھ بھول گئے

اب اپنی حقیقت بھی ساغر بے ربط کہانی لگتی ہے
دُنیا کی کی حقیقت کیا کہئیے کُچھ یاد رہی کُچھ بھول گئ

Tum jo auron ko batatey ho jeeny ke tareeqay

تم جو اوروں کو بتاتے ہو جینے کے طریقــــــے
خود اپنی مٹھی میں میری جان لیۓ بیٹھے ہو

Tum jo auron ko batatey ho jeeny ke tareeqay

Khud apni muthee mein meri jan liye bethy ho

Tab yad bahot tum aatey ho تب یاد بہت تم آتے ہو

جب رات کی ناگن ڈستی ہے
نَس نَس میں زہر اترتا ہے
جب چاند کی کرنیں تیزی سے
اس دل کو چیر کے آتی ہیں
جب آنکھ کے اندر ہی آنسو
زنجیروں میں بندھ جاتے ہیں
سب جذبوں پر چھا جاتے ہو
تب یاد بہت تم آتے ہو
جب درد کی جھانجر بجتی ہے
جب رقص غموں کا ہوتا ہے
خوابوں کی تال پہ سارے دُکھ
وحشت کے ساز بجاتے ہیں
گاتے ہیں خواہش کی لے میں
مستی میں جھومتے جاتے ہیں
سب جذبوں پر چھا جاتے ہو
تب یاد بہت تم آتے ہو
تب یاد بہت تم آتے ہو

Khaak ko hath lagatey to sitara karty خاک کو ہاتھ لگاتے تو ستارا کرتے

ہم بہرحال بسَر خواب تمھارا کرتے
ایک ایسی بھی گھڑی عشق میں آئی تھی کہ ہم
خاک کو ہاتھ لگاتے تو ستارا کرتے
اب تو مل جاؤ ہمیں تم کہ تمھاری خاطر
اتنی دور آ گئے دنیا سے کنارا کرتے
محوِ آرائشِ رُخ ہے وہ قیامت سرِ بام
آنکھ اگر آئینہ ہوتی تو نظارا کرتے
ایک چہرے میں تو ممکن نہیں اتنے چہرے
کس سے کرتے جو کوئی عشق دوبارا کرتے
جب ہے یہ خانۂ دل آپ کی خلوت کے لیے
پھر کوئی آئے یہاں، کیسے گوارا کرتے
کون رکھتا ہے اندھیرے میں دیا، آنکھ میں خواب
تیری جانب ہی ترے لوگ اشارا کرتے
ظرفِ آئینہ کہاں اور ترا حسن کہاں
ہم ترے چہرے سے آئینہ سنوارا کرتے

Kabhi ye daawa ke woh mera hai faqat mera hai کبھی یہ دعوا کہ وہ میرا ہے فقط میرا

کبھی یہ دعوا کہ وہ میرا ہے فقط میرا
کبھی یہ ڈر کہ وہ مجھ سے جدا تو نہیں
کبھی یہ دعا کہ اسے مل جاۓ سارے جہاں کی خوشیاں
کبھی یہ خوف کہ خوش وہ میرے بنا تو نہیں
کبھی یہ تمنا کہ بس جاؤں اس کی نگاہوں میں
کبھی یہ ڈر کہ اُس کی آنکھوں کو کسی نے دیکھا تو نہیں
کبھی یہ خواہش کہ زمانہ ہو منتظر اُس کا
کبھی یہ وہم کہ وہ کس سے مِلا تو نہیں
کبھی یہ آرزو کہ وہ جو مانگے مل جاۓ اسے
کبھی یہ وسوسے کہ اس نے میرے سوا کچھ مانگا تو نہیں

Hum to aseer e khawab thy tabeer jo bhi thee ہم تو اسیرِ خواب تھے تعبیر جو بھی تھی

ہم تو اسیرِ خواب تھے تعبیر جو بھی تھی
دیوار پر لکھی ہوئی تحریر جو بھی تھی
ہر فرد لاجواب تھا، ہر نقش بے مثال
مِل جُل کے اپنی قوم کی تصویر جو بھی تھی
جو سامنے ہے، سب ہے یہ،اپنے کیے کا پھل
تقدیر کی تو چھوڑئیے تقدیر جو بھی تھی
آیا اور اک نگاہ میں برباد کر گیا
ہم اہلِ انتظار کی جاگیر جو بھی تھی
قدریں جو اپنا مان تھیں، نیلام ہو گئیں
ملبے کے مول بک گئی تعمیر جو بھی تھی
طالب ہیں تیرے رحم کےعدل کے نہیں
جیسا بھی اپنا جُرم تھا، تقصیر جو بھی تھی
ہاتھوں پہ کوئی زخم نہ پیروں پہ کچھ نشاں
سوچوں میں تھی پڑی ہُوئی، زنجیر جو بھی تھی
یہ اور بات چشم نہ ہو معنی آشنا
عبرت کا ایک درس تھی تحریر جو بھی تھی
امجد ہماری بات وہ سُنتا تو ایک بار
آنکھوں سے اُس کو چومتے تعزیر جو بھی تھی

Wednesday, 30 April 2014

Suno bhulana asaan nahi hota !بھلانا آسان نہیں ہوتا میری ایک بات مانو گے؟

!سنو۔۔
!بھلانا آسان نہیں ہوتا
میری ایک بات مانو گے؟
ایک کام کرنا تم۔۔
بہت مصروف ہو جانا
کسی سے کچھ نہیں کہنا
کوئ پوچھے بھی تو تم
بہانہ اچھا بنا دینا
کبھی تنہا نکل جانا
شہر کے ویرانوں میں
کبھی آباد کر لینا
کوئ گوشہ خیالوں میں
کبھی ہنسنا کبھی رونا
کبھی ساری رات نہ سونا
کبھی آہٹ اگر کچھ ہو
اچانک چونک جانا تم
!سنو!وہ میں نہیں۔۔ لیکن ۔۔
ہاں میری یاد وہ ہو گی
اسے ہی تھام لینا تم
اسے بانہوں میں بھر لینا
سینے میں چھپا لینا
پھر یکدم مسکرانا تم
نہ خود کو آزمانا تم
چھلک جائیں اگر کچھ اشک
!ان میں کھلکھلانا تم۔۔!سنو۔۔
تم پر مان ہے بہت
میری ایک بات مانو گے؟
بھلانا ضروری نہیں ہوتا
محبت قرب ہے بےشک
جو بستی ہے روحوں میں
محبت وصل ہے بےشک
جو ہجراں میں چھلکتی ہے
یہ کیف ہے مہک سی ہے
اگر بتیوں سی سلگتی ہے
محبت کو اگر جانو
تو یہ دعاۓ یار جیسی ہے
جب بے اختیار ہو جانا
اپنے دست وا کرنا
کچھ آنسو بہانا تم
رب کو سب بتانا تم
محبت کو دعا دینا
محبت سانس جیسی ہے
اسے ہر سانس جی لینا
!سنو۔۔
بھلانا آسان نہیں ہوتا
انوکھا کام کر جانا
تم ایک راز ہو جانا
محبت حیاتِ جاودانی ہے
اک اداۓ مہربانی ہے
محبت میں نہیں مرتے
سنو تم بوجھ نہیں ڈھونا
تم ہر پل امر ہونا
!سنو۔۔
تمہیں بےشک اجازت ہے
دل چاھے تو بھلا دینا
مگر ۔۔ کہا ناں ۔۔
تم متاعِ حیات ہو جاناں
تم پر مان ہے بہت
میری ایک بات مانو گے؟
مجھ ہر احسان جانو گے
خود کو سپردِ خدا کرکے
!محبت کو نبھا لینا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تم ہر پل مسکرا لینا
!محبت کو نبھا لینا۔۔۔۔۔

Adab ki had mein hoon Be adab nahi hota

Adab Ki Hadd Me Hoon, Be-Adab Nahi Hota
Tumhara Tazkara Ab Roz-O-Shab Nahi Hota

Kabhi Kabhi Chalak Parthi Hein Yunhi Ankhein
Udaas Honey Ka Koi Sabab Nahi Hota

Me Waldein Ko Yeh Baat Kese Samjhaaon??
Muhabatoon Me Hasab Nasab Nahi Hota

Kai Ameero’n Ki Mehromiyaan Na Poch K Bas
Ghareeb Hone Ka Ehsaas, Ab Nahi Hota

Wahan K Log Baray DilFaraib Hotay Hain
Mera Behakna Bhi Kuch Ajab Nahi Hota

Mei Us Zameen Ka Deedaar Kerna Chahta Hon
Jahan Kabhi Be Khuda Ka Ghazab Nahi Hota

Jissey aks aks ganwa dia

Jisy Aks Aks Gan'wa Dia.....

Kbhi Ru'Ba'Ru Thi Mre Lye....

Jisy Nqsh Nqsh Bujha Dia....

Kbhi Char'su Thi Mre Lye....

Jo Had_e_Hawa Se B Door Hai....

Kbhi Ku'Ba'Ku Thi Mre Lye....

Jisy Khat Me Likhta Hon Ab Main "Aap"....

Kbhi Sirf "Tu" Thi Mre Lye.

Likhne par aaon to behisab likh jata hon mein

LikhnE Par Aa0'n T0 BE'Hisab Likh Jata H00'N Men

UsEy Hi Chand Aur PhIr Mahtab Likh Jata H00'N Men

MErE Qalam MEn Hy Abhi Itni Taqat Baqi,

Zulmat K SamNEy Shidat-E-Jazbat Likh Jata H00'N Men.

R0z Tazkrah H0ta Hy MerE SamNE Ph00l0'N Ka

UsEy Hi Shabnam, UsEy Hi Gulab Likh Jata H00'N MEn

W0 J0 Ly K ChaltE Hain ApnE Khyalat Ka Tazkarah

Un Ki Har BE'Basi Ka Jawab Likh Jata H00'N Men

Itna Kh0 Jata H00'N Main Us Ki Yad0'N MEin

UsEy Hi Ghazl0'N Ka Intkhab Likh Jata H00'N Main

K0i J0 P0chta Hy KEh TEra Sanam Kesa Hy

Fursat Sy Tarasha H0wa G0har-E-Nayab Likh Jata H00'n Mein,

Bana k banjr ye dil ki basti ujaar jaty hain soch lena

Bana k banjr ye dil ki basti ujaar jaty hain soch lena.
Mohabton me to aisy aisy selab aty hain soch lena.

Ye uljhi zulfen,ye lal ankhen,ye maily kpry,ye Zrd Chehra.
Hsaas Logon Ki Zindgi Me Ye Baab Aty Hain S0ch Lena.

Aadha Din To Sulagty Sehra Ki Jalti Raiton Py Chal Liya kr.
K hijraton Me To Is Se barh kr Azab atay Hain S0ch Lena.

Hijar ne Mere Tabah kia ha to chor do na ye pyar krna.
K Unki Janib Se is trah b Jwab Atay Hein Soch Lena.!

Mohabbat zindagi ko husan mein tabdeel karti hai محبت زندگی کو حسن میں تبدیل کرتی ہے

ادھورے پن کی رفتہ رفتہ یہ تکمیل کرتی ہے
محبت زندگی کو حسن میں تبدیل کرتی ہے

کبھی سوچا بھی ہے تو نے؟ کہ وہ مغرور سی لڑکی
ناجانے کیوں تیرے ہر حکم کی تعمیل کرتی ہے

نہیں روتی ہے اب وہ بند کمرے میں کہیں گھٹ کر
وہ اپنے آنسوؤں کو شعر میں تمثیل کرتی ہے

سمندر ڈوب جاتے ہیں بنا سوچے، بنا سمجھے
وہ اپنی آنکھ کو جب خامشی کی جھیل کرتی ہے

منور ہوتی جاتی ہے شمع، جب رات ڈھلتی ہے
تیری چاہت میرے احساس کو قندیل کرتی ہے

Tuesday, 29 April 2014

Jo bat bhi karte hain utar jati haio dil mein جو بات بھی کرتے ہیں اتر جاتی ہے دل میں

جو بات بھی کرتے ہیں اتر جاتی ہے دل میں
تاثیر جدا سی ؛ ہمیں ورثے میں ملی ہے

Jo bat bhi karte hain utar jati haio dil mein
Taseer judaa si hamen virsay mein mili hai

Hijr apne lafzon ke khazaane kholta kab tha بجز اپنے لفظوں کے خزانےکھولتا کب تھا

بجز اپنے لفظوں کے خزانے ______ کھولتا کب تھا
وہ آنکھیں سوچتی کب تھیں وہ چہرہ بولتا کب تھا

اُسے خود کو گنوانے کا ہنر بخشا کس رُت نے
وہ اپنا عکس گہرے پانیوں میں گھولتا کب تھا

میں ڈرتا ہوں یہ فصلِ ہجر کی سازش نہ ہو ورنہ
وہ اپنے قیمتی آنسو ہوا میں رولتا کب تھا

یقیناً پھوٹتی ہیں مستیاں اس کی اداؤں سے
وگرنہ روبرو اُس کے زمانہ ڈولتا کب تھا

غلط فہمی کے سائے درمیاں بچھتے گئے محسن
میں اُس کے سامنے ہر بات پہلے تولتا کب تھا

Tujhe yad hai issi rait par تجھے یاد ہے اسی ریت پر

تجھے یاد ہے اسی ریت پر

میں ہوں جس مکان کی چھت تلے
مرا گھر نہیں
ترا نام درج ہے جس جگہ
ترا در نہیں
تجھے یاد ہے کسی شام ہم نے بنایا تھا
کہیں ایک چھوٹا سا ریت گھر
اُسی ریت سے اُسی ریت پر
(اُسی ریت پر
جو تھی راہ میں کسی موج کے
کبھی اپنے ہونے کے دھیان میں
کبھی معجزوں کے گمان میں)
ہمیں علم تھا
ہمیں علم تھا کہ وہ ریت گھر
جو تھے منتظر کسی موج کے
انہیں ٹوٹ جانے سے روکنے کا خیال امرِ محال ہے
اسی موج و ریگ کے کھیل سے ہی بحال ہے
وہ تلازمہ
وہی رابطہ، جسے ماننے کے فشار میں
رہِ آگہی کے سراب بھی
سبھی خواب بھی
اسی ایک لمحۂ مختصر کے حصار میں ہے گھرا ہوا
خطِ ریگ بھی کفِ آب بھی
پہ یہ داستاں
تو تھی ترجماں کسی کھیل کی
اُسی کھیل کی
جسے کھیلتے ہمیں آلیاکسی رات نے
اُسی رات نے
جسے اپنے خوں سے جواں کیا
مرے شوق نے ترے ساتھ نے
کسی ان چھوئے سے خیال نے
کسی دور ہوتی سی بات نے
تجھے یاد ہے مجھے یاد ہے
وہ جو بات کی بڑی دیر تک
مرے ہاتھ سے ترے ہاتھ نے
کہاں تھا گُماں، کسے تھی خبر
جو کہا تھا شوق کی لہر نے
جو لکھا ریت کی لوح پر
اُسی ایک شام کا کھیل تھا
اُسی ایک پل کا جمال تھا
اُسی کھیل میں
اُسی شام کو
وہ جو ریت گھر سے بکھر گئے
وہ جو ایک پل میں اُجڑ گئے
مرے خواب تھے
ترے خواب تھے

Wednesday, 23 April 2014

Woh mohabbat ka Khuda hai maloom na tha

Wo MoHaBbAT Ka KhUdA Hai MaLooM Na ThA
SajDa UsKo Bhi RaWa Hai MuJhe MaLooM Na ThA

Wo BiCharNe LagA MuJh Se To Anaa TooT GaYi
RooT JaNa Hi AdA Hai MujHe MaLooM Na ThA

SuBha HoNe Pe Bhi  AanKhoN Se AnDheRa Na GaYa
RaaT SuRaj Se KhAFa Hai MuJhe MaLoom Na ThA

RooTh JaNe PaR MaNaNA UsE AaTa Hi Nahi
YeH B MeRi Hi KhAtA Hai MuJhe MaLooM Na ThA

ZiNdaGi JurM-E-AnAsaR Hai ZaMaNe MaIn WaSi
SaNs LeNa Bhi SaZa Hai MuJHe MaLoom NaHI tHA

Tuesday, 22 April 2014

Teri Aankhein Beqarari Ka Afsana Hain

Teri Aankhein Beqarari Ka Afsana Hain,

Mohabbat K Mazhab Mein,

Inahein Parh Kar,

Aadhe Mein Chorrna Gunah He,

Aur In Ki Khatir Sar Na Dena,

Kufar Hai Azeem,

Sach Poocho To Meri Jang,

Teri Aankhon K Tehfuz Ki Khatir He,

Aur Ye Aankhein Teri,

Ye Gawahi Dein Gi Keh,

Main Ne Mohabbat Ki,

Tamna Ki Aur Mara Gaya.........!

Jesy mera koi Khuda nahi جیسے میرا کوءی خدا نہین

وھی سورشین ھین وھی ترپ
وھی درد و غم وھی سوز دل

یہی زندگی ھے تو کیا کہون
کوءی اس سے برھ کے سزا نہین

انہین پا کے جو نہ پا سکین
یہ میرے نصیب کی بات تھی

وہ ہزار مجھ سے جدا رہے
میرے دل سے پھر بھی جدا نھین

وہی اپنی طرزوفا رہی،
وہی انکی مشق جفا رہی

وہ ظلم كرتے ہین اسطرح
جیسے میرا کوءی خدا نہین

Main Such Kahon Gi Magar Main Phir Bhi Haar Jaon Gi میں سچ کہوں گی مگر پھر بھی ہارجاؤں گی

دھنک دھنک مری پوروں کے خواب کردے گا
وہ لمس میرے بدن کو گلاب کردے گا
قبائے جسم کے ہر تار سے گزرتا ہُوا
کرن کا پیار مجھے آفتاب کردے گا
جنوں پسند ہے دل اور تجھ تک آنے میں
بدن کو ناؤ،لُہو کو چناب کردے گا
میں سچ کہوں گی مگر پھر بھی ہارجاؤں گی
وہ جھوٹ بولے گا، اورلاجواب کردے گا
اَنا پرست ہے اِتنا کہ بات سے پہلے
وہ اُٹھ کے بند مری ہر کتاب کردے گا
سکوتِ شہرِ سخن میں وہ پُھول سا لہجہ
سماعتوں کی فضا خواب خواب کردے گا
اسی طرح سے اگر چاہتا رہا پیہم
سخن وری میں مجھے انتخاب کردے گا
مری طرح سے کوئی ہے جو زندگی ا پنی
تُمھاری یاد کے نام اِنتساب کردے گا

Dhanak Dhanak Meri Poron K Khawab Kar De Ga,

Wo Lams Mere Badan Ko Gulab Kar De Ga,

Qaba-E-Jisam K Har Taar Se Guzarta Howa,

Kiran Ka Pyar Mujhe Aftab Kar De Ga,

Janoon Pasand Hai Dil Aur Tujh Tak Aane Mein,

Badan Ko Naao Laho Ko Chanab Kar De Ga,

Main Such Kahon Gi Magar Main Phir Bhi Haar Jaon Gi,

Wo Jhoot Bole Ga Aur La Jawab Kar De Ga,

Anaa Parst Hai Itna K Bat Se Pehle,

Wo Uth K Band Meri Har Kitab Kar De Ga,

Sakoot-E-Shehr-E-Sukhan Mein Wo Phool Sa Lehja,

Sama'aton Ki Fiza Khawab Khawab Kar De Ga,

Isi Tarha Se Agar Chahta Raha Pehim,

Sukhan Wari Mein Mujhe Intikab Kar De Ga,

Meri Tarha Se Koi Hai Jo Zindagi Apni,

Tumhari Yad K Naam Intasab Kar De Ga.............!

Hamein bhi roshniyon par jo dastaras hoti ہمیں بھی روشنیوں پر جو دسترس ھوتی

..ہمیں بھی روشنیوں پر جو دسترس ھوتی
..کبھی چراغ جلاتے،کبھی بجھا دیتے

..اب اس کی یاد سے اس کا بدن تراشتے ہیں
..وہ خواب بھی تو نہیں تھا کہ ہم بھلا دیتے

Hamein bhi roshniyon par jo dastaras hoti...

To kabhi charaghon ko jalate kabhi bujhate...

Ab us ki yad se us ka badan tarashtey hain...

Woh khawab bhi nahi tha ke hum bhula dety...

Monday, 21 April 2014

Woh najane kon sa sal tha ﻭﮦ ﻧﺠﺎﻧﮯ ﮐﻮﻥ ﺳﺎ ﺳﺎﻝ ﺗﮭﺎ ؟؟

،ﮐﮩﯿﮟ ﺧﻮﻥ ِﺩﻝ ﺳﮯ ﻟﮑﮭﺎ ﺗﻮ ﺗﮭﺎ
!!ﺗﯿﺮﮮ ﺳﺎﻝ ِﮨﺠﺮ ﮐﺎ ﺳﺎﻧﺤﮧ
،ﻭﮦ ﺍﺩﮬﻮﺭﯼ ﮈﺍﺋﯿﺮﯼ ﮐﮭﻮ ﮔﺌﯽ
ﻭﮦ ﻧﺠﺎﻧﮯ ﮐﻮﻥ ﺳﺎ ﺳﺎﻝ ﺗﮭﺎ ؟؟

Mujhe aksar yeh kehti thi

Mujhe aksar yeh kehti thi
Ke itni bar kehte ho,
“Mujhe Tum se Mohabbat hai”
ke ab dil per yeah sunanay se
Asar koi nahi hota
Magar jab aaj danista,
Nahi bola use mein ne
“Mujhe tum se mohabbat hai”
To uski ankh bhar aye

NaJanay Kis K Muqaddar Mai Likhay Ho Tum

NaJanay Kis K Muqaddar Mai Likhay
Ho Tum..
Par Yeh bhi Sach Haii K Umeedwaar
Hum Aaj Bhi Hain..

Sab Kch Haar Chale

Ye Raah Akeli Kat’ti HAI Yahan Sath Na Koi Yar Chale,
 
Us Paar Na jane Kya Payen Is Paar To Sab Kch Haar Chale

Agar Wo Mera Hai To Khawab Bhi Bas Mera Hi Dekhay

Nahi Pasand Mohabbat Main Milawat Mujh Ko .............!!
 
Agar Wo Mera Hai To Khawab Bhi Bas Mera Hi Dekhay...!!

Tumhare barey mein hum ne jtne bhi khawab dekhe

Tumhare barey mein hum ne jtne bhi khawab dekhe,
Yeh khawab kab they dar-haqeeqat azaab dekhe,

Tumhare chehere ki chandni pe nazar ho jis ki,
Woh kese mumkin hai jalwaa mahtaab dekhe,

Yeh kher-o-shar ki tameez apni jagha hai lekin,
Jinon mein kis ne gunah dekhe sawaab dekhe,

Hamare honton pe peyas ab tak sajji huyi hai,
Tumhari chahat mein hum ne kya kya saraab dekhe,

Mere chaman me hai zard mausam ki hukmrani,
Zamana guzra hai koi taaza gulaab dekhe,

Teri nigahon ne mast-o-bekhud kiya hai warna,
Sharab dekhi na hum ne jaam-e-sharab dekhe,

Qaraar ik pal nahi hai us ke bagher Arshad,
Judai mein uski hum ne kitne azaab dekhe..

Thursday, 17 April 2014

Kash aankhein parha kare koi کاش آنکھیں پڑھا کرے کوئی

آئینے سے رہا کرے کوئی
مجھ کو مجھ سے جدا کرے کوئی

بے بسی جان لینے لگتی ہے
جو نہ روئے تو کیا کرے کوئی

شدتِ غم کو جاننے کے لئے
کاش آنکھیں پڑھا کرے کوئی