affiliate marketing Famous Urdu Poetry

Wednesday, 23 April 2014

Woh mohabbat ka Khuda hai maloom na tha

Wo MoHaBbAT Ka KhUdA Hai MaLooM Na ThA
SajDa UsKo Bhi RaWa Hai MuJhe MaLooM Na ThA

Wo BiCharNe LagA MuJh Se To Anaa TooT GaYi
RooT JaNa Hi AdA Hai MujHe MaLooM Na ThA

SuBha HoNe Pe Bhi  AanKhoN Se AnDheRa Na GaYa
RaaT SuRaj Se KhAFa Hai MuJhe MaLoom Na ThA

RooTh JaNe PaR MaNaNA UsE AaTa Hi Nahi
YeH B MeRi Hi KhAtA Hai MuJhe MaLooM Na ThA

ZiNdaGi JurM-E-AnAsaR Hai ZaMaNe MaIn WaSi
SaNs LeNa Bhi SaZa Hai MuJHe MaLoom NaHI tHA

Tuesday, 22 April 2014

Teri Aankhein Beqarari Ka Afsana Hain

Teri Aankhein Beqarari Ka Afsana Hain,

Mohabbat K Mazhab Mein,

Inahein Parh Kar,

Aadhe Mein Chorrna Gunah He,

Aur In Ki Khatir Sar Na Dena,

Kufar Hai Azeem,

Sach Poocho To Meri Jang,

Teri Aankhon K Tehfuz Ki Khatir He,

Aur Ye Aankhein Teri,

Ye Gawahi Dein Gi Keh,

Main Ne Mohabbat Ki,

Tamna Ki Aur Mara Gaya.........!

Jesy mera koi Khuda nahi جیسے میرا کوءی خدا نہین

وھی سورشین ھین وھی ترپ
وھی درد و غم وھی سوز دل

یہی زندگی ھے تو کیا کہون
کوءی اس سے برھ کے سزا نہین

انہین پا کے جو نہ پا سکین
یہ میرے نصیب کی بات تھی

وہ ہزار مجھ سے جدا رہے
میرے دل سے پھر بھی جدا نھین

وہی اپنی طرزوفا رہی،
وہی انکی مشق جفا رہی

وہ ظلم كرتے ہین اسطرح
جیسے میرا کوءی خدا نہین

Main Such Kahon Gi Magar Main Phir Bhi Haar Jaon Gi میں سچ کہوں گی مگر پھر بھی ہارجاؤں گی

دھنک دھنک مری پوروں کے خواب کردے گا
وہ لمس میرے بدن کو گلاب کردے گا
قبائے جسم کے ہر تار سے گزرتا ہُوا
کرن کا پیار مجھے آفتاب کردے گا
جنوں پسند ہے دل اور تجھ تک آنے میں
بدن کو ناؤ،لُہو کو چناب کردے گا
میں سچ کہوں گی مگر پھر بھی ہارجاؤں گی
وہ جھوٹ بولے گا، اورلاجواب کردے گا
اَنا پرست ہے اِتنا کہ بات سے پہلے
وہ اُٹھ کے بند مری ہر کتاب کردے گا
سکوتِ شہرِ سخن میں وہ پُھول سا لہجہ
سماعتوں کی فضا خواب خواب کردے گا
اسی طرح سے اگر چاہتا رہا پیہم
سخن وری میں مجھے انتخاب کردے گا
مری طرح سے کوئی ہے جو زندگی ا پنی
تُمھاری یاد کے نام اِنتساب کردے گا

Dhanak Dhanak Meri Poron K Khawab Kar De Ga,

Wo Lams Mere Badan Ko Gulab Kar De Ga,

Qaba-E-Jisam K Har Taar Se Guzarta Howa,

Kiran Ka Pyar Mujhe Aftab Kar De Ga,

Janoon Pasand Hai Dil Aur Tujh Tak Aane Mein,

Badan Ko Naao Laho Ko Chanab Kar De Ga,

Main Such Kahon Gi Magar Main Phir Bhi Haar Jaon Gi,

Wo Jhoot Bole Ga Aur La Jawab Kar De Ga,

Anaa Parst Hai Itna K Bat Se Pehle,

Wo Uth K Band Meri Har Kitab Kar De Ga,

Sakoot-E-Shehr-E-Sukhan Mein Wo Phool Sa Lehja,

Sama'aton Ki Fiza Khawab Khawab Kar De Ga,

Isi Tarha Se Agar Chahta Raha Pehim,

Sukhan Wari Mein Mujhe Intikab Kar De Ga,

Meri Tarha Se Koi Hai Jo Zindagi Apni,

Tumhari Yad K Naam Intasab Kar De Ga.............!

Hamein bhi roshniyon par jo dastaras hoti ہمیں بھی روشنیوں پر جو دسترس ھوتی

..ہمیں بھی روشنیوں پر جو دسترس ھوتی
..کبھی چراغ جلاتے،کبھی بجھا دیتے

..اب اس کی یاد سے اس کا بدن تراشتے ہیں
..وہ خواب بھی تو نہیں تھا کہ ہم بھلا دیتے

Hamein bhi roshniyon par jo dastaras hoti...

To kabhi charaghon ko jalate kabhi bujhate...

Ab us ki yad se us ka badan tarashtey hain...

Woh khawab bhi nahi tha ke hum bhula dety...

Monday, 21 April 2014

Woh najane kon sa sal tha ﻭﮦ ﻧﺠﺎﻧﮯ ﮐﻮﻥ ﺳﺎ ﺳﺎﻝ ﺗﮭﺎ ؟؟

،ﮐﮩﯿﮟ ﺧﻮﻥ ِﺩﻝ ﺳﮯ ﻟﮑﮭﺎ ﺗﻮ ﺗﮭﺎ
!!ﺗﯿﺮﮮ ﺳﺎﻝ ِﮨﺠﺮ ﮐﺎ ﺳﺎﻧﺤﮧ
،ﻭﮦ ﺍﺩﮬﻮﺭﯼ ﮈﺍﺋﯿﺮﯼ ﮐﮭﻮ ﮔﺌﯽ
ﻭﮦ ﻧﺠﺎﻧﮯ ﮐﻮﻥ ﺳﺎ ﺳﺎﻝ ﺗﮭﺎ ؟؟

Mujhe aksar yeh kehti thi

Mujhe aksar yeh kehti thi
Ke itni bar kehte ho,
“Mujhe Tum se Mohabbat hai”
ke ab dil per yeah sunanay se
Asar koi nahi hota
Magar jab aaj danista,
Nahi bola use mein ne
“Mujhe tum se mohabbat hai”
To uski ankh bhar aye

NaJanay Kis K Muqaddar Mai Likhay Ho Tum

NaJanay Kis K Muqaddar Mai Likhay
Ho Tum..
Par Yeh bhi Sach Haii K Umeedwaar
Hum Aaj Bhi Hain..

Sab Kch Haar Chale

Ye Raah Akeli Kat’ti HAI Yahan Sath Na Koi Yar Chale,
 
Us Paar Na jane Kya Payen Is Paar To Sab Kch Haar Chale

Agar Wo Mera Hai To Khawab Bhi Bas Mera Hi Dekhay

Nahi Pasand Mohabbat Main Milawat Mujh Ko .............!!
 
Agar Wo Mera Hai To Khawab Bhi Bas Mera Hi Dekhay...!!

Tumhare barey mein hum ne jtne bhi khawab dekhe

Tumhare barey mein hum ne jtne bhi khawab dekhe,
Yeh khawab kab they dar-haqeeqat azaab dekhe,

Tumhare chehere ki chandni pe nazar ho jis ki,
Woh kese mumkin hai jalwaa mahtaab dekhe,

Yeh kher-o-shar ki tameez apni jagha hai lekin,
Jinon mein kis ne gunah dekhe sawaab dekhe,

Hamare honton pe peyas ab tak sajji huyi hai,
Tumhari chahat mein hum ne kya kya saraab dekhe,

Mere chaman me hai zard mausam ki hukmrani,
Zamana guzra hai koi taaza gulaab dekhe,

Teri nigahon ne mast-o-bekhud kiya hai warna,
Sharab dekhi na hum ne jaam-e-sharab dekhe,

Qaraar ik pal nahi hai us ke bagher Arshad,
Judai mein uski hum ne kitne azaab dekhe..

Thursday, 17 April 2014

Kash aankhein parha kare koi کاش آنکھیں پڑھا کرے کوئی

آئینے سے رہا کرے کوئی
مجھ کو مجھ سے جدا کرے کوئی

بے بسی جان لینے لگتی ہے
جو نہ روئے تو کیا کرے کوئی

شدتِ غم کو جاننے کے لئے
کاش آنکھیں پڑھا کرے کوئی

Aey kash kahein se aa jaey اے کاش کہیں سے آجائے

میں نے برسوں عشق نماز پڑھی
تسبیحِ محبت ہاتھ لئے
چلی ہجر کی میں تبلیغ کو اب
تری چاہت کی آیات لئے
اک آگ وہی نمرود کی ہے
میں اشک ہوں اپنے ساتھ لئے
مجذوب ہوا دل بنجارہ
بس زخموں کی سوغات لئے
دل مسجد آنکھ مصلیٰ ہے
بیٹھی ہوں خالی ہاتھ لئے
اے کاش کہیں سے آجائے
!!!....وہ وعدوں کی خیرات لئے

Akelay raat bhar jaaga nahi jata اکیلے رات بھر جاگا نہیں جاتا

سنو جاناں
یوں تم سے دُور
اب مجھ سے
اکیلے رات بھر جاگا نہیں جاتا
یوں تنہا بوجھ چاہت کا
تو اب اُٹھتا نہیں مجھ سے
سنو
کیا ایسا ہو نہیں سکتا؟
کہ آدھی رات کو کچھ پل سہی
تم اگر جاگو
یہ چاہت کا حسِیں اِک بوجھ
آدھا ہی سہی
تم بانٹ لو مجھ سے
پھر آدھا درد تم لے لو
پھر آدھے خواب تم دیکھو
یہ دِل کی بے قراری
مجھ سے آدھی بانٹ لو تم بھی
تو اب تم ہی کہو جاناں؟
کہ اس بارِ محبت کو
تم آدھا بانٹ لو گے ...!!!!

Mere Haq Main Dua Karna

Bichartay Waqt Us Ne Aik Hi Fiqrah Kaha Tha
Usey Kiya Ilm
Mere Hurf Se Taseer Kab Ki Uth Chuki Hai !
Dua Ka Phool
Mere LAb Pa Khiltay Hi
Achanak Toot Jata Hai
Main Kis Khushboo Ko Us K Hath Par Bandhoon
Mujhay Khushboo Se Dar Lagne Laga Hai __!

Tujhay Khuda Se Mang Raha Hai

Kiya Kabhi Tu Ne
Yeh Bhi Socha Hai K
Raat K Akhri Peher Main Koi
Nam Ankhon Se
Larztay Alfazon Se
Tujhay Khuda Se Mang Raha Hai !

سرِ مقتل بھی صدا دی ہم نے

سرِ مقتل بھی صدا دی ہم نے
دل کی آواز سنا دی ہم نے

پہلے اک روزنِ در توڑا تھا
اب کے بنیاد ہلا دی ہم نے

پھر سرِ صبح وہ قصہ چھیٹرا
دن کی قندیل بجھا دی ہم نے

آتشِ غم کے شرارے چن کر
آگ زنداں میں لگا دی ہم نے

رہ گئے دستِ صبا کملا کر
پھول کو آگ پلا دی ہم نے

آتشِ گل ہو کہ ہو شعلۂِ ساز
جلنے والوں کو ہوا دی ہم نے

کتنے ادوار کی گم گشتہ نوا
سینۂِ نَے میں چھپا دی ہم نے

دمِ مہتاب فشاں سے ناصر
آج تو رات جگا دی ہم نے

Wednesday, 16 April 2014

Teri Tarah Hi Bann Gaya Hu Main

Mujhe Tujh Se Ab Bhi Mohabbat Hai,
Magar Na Jaane Kyon,
Ab Iss Mohabbat Mein, Pahle Si Shiddat Nahi Rahi,
Mujhe Tu Ab Bhi Yaad Aata Hai,
Magar Na Jaane Kyon,
Ab Teri Yaad Me, Sitaro Se Haal-E-Dil Kahne Ki Aadat Nahi Rahi,
Mujhe Tera Ab Bhi Intezaar Rahta Hai,
Magar Na Jaane Kyon,
Ab Tujh Se Milne Ki, Tadap Nahi Rahi Sochta Hun,
Kitna Badal Gaya Hun Main Lagta Hai,
Teri Tarah Hi Bann Gaya Hu Main...!!!

Tum kiun Baney they Dil Ka Sahara Jawab Do

Tum kiun Baney they Dil Ka Sahara Jawab Do.
Ab Kahan Hai Wo Pyar Tumhara JAwab Do.?

Kis Ko Tha Naz Apni Adaon Pe Har Ghari.
Kis Ne Kiya Wafa Se Kinara Jawab Do.?

Hum to seh na saken gay judai ka ghamm.
YE Qol tha mera, ke tumhara jawab do.

Ek tarf zindagi ek tarf mout hai.
Ab kis taraf karo gay ishara jawab do.

Tuesday, 8 April 2014

Hamain to hukm e mujawari hai

Hamain to hukm e mujawari hai !!!
Mazar e dil main hai kon madfan?
Yeh kis uroosa ka maqbara hai?
Na koi katba, na koi takhti
Na sung e marmar ki sil pe likha hua
Mohabbat ka koi shair
Faqat serhanay se paainti tak
Amar ki bail ik lipat si gai hai
Jo ik zamanay se keh rahi hai
Yahan thikanatha aashiqi ka
Yeh peer khana tha aashiqi ka
Kisay khabar keh
Yahan hai madfan
Faqeer koi
Aseer koi
Ya phir hai waris ki
Heer koi
Magar hamari majal hi kya
Yahan jo bolay
Zuban kholain
Hamaray lab to
Silay huay hain
Na janay kab se
Silay huay hain
Hamain to hukm e mujawari hai !!!

Mohabbat Aakhri Saya

Bohut Ghoomi Jahan Bhar Main
Mujhey Awargi Lay Ker
Kabhi Sehra Samander Main
Kabhi Dunya Key Mailon Main
Kabhi Jungle Main Bhatkaya

Ajab Wehshat Lahoo Main Thi
Nazar Bhi Justojoo Main Thi
Kai Chehrey They Ankhon Main
Unhi Chehron Ki Khwahish Main
Her Ik Manzil Ko Thukraya
Sukoon Phir Bhi Nahi Paya

Bohut Ghooma Jahan Bher Main
To Phir Aakhir Khula Mujh Per
Woh Jis Ko Chor Aaya Tha
Main Apney Hijr Main Jalta
Wohi Sachi Mohabbat Thi

Usi Ki Yaad Key Moti
Baney Jeewan Ka Sarmaya
Mohabbat Aakhri Manzil
Mohabbat Aakhri Saya

Neem shab ka ujaar sannata

Neem shab ka ujaar sannata
Khwab alood be sada rastay
Teergi say ati hui galyaan
Khurdaray, sakht, be charagh kiwar
Sehmi sehmi hawa ki dastak say
Saans letey hain be hawasi main
Pairr per chund zard ru pattay
Toot'tey hain zameen per girtay hain
(Jesey be shakal chaap per aksar
Koi beemar dil dharakta he)
Aesi tanhaiyon me bhi ab tak
Main teray nam jagtay sotey
Kheriyat ke khatoot likhta hun

Kaha mushkil mein rehta hu کہامشکل میں رہتا ہوں

کہامشکل میں رہتا ہوں
!کہا آسان کر ڈالو
کہ جس کی چاہ زیادہ ہو
!وہی قربان کر ڈالو

کہا بے قلب ہیں آہیں
!کہا اُس سے تڑپ مانگو
اُٹھو تاریکیءِ شب میں
!ذرا خونِ جگر ڈالو

کہا رازِ سُکوں کیا ہے؟
!کہا لوگوں کے دکھ بانٹو
جو چہرہ بے دھنک دیکھو
!اُسے رنگوں سے بھر ڈالو

Kaha mushkil mein rehta hu,
kaha asan kar dalo!
keh jis ki chah zada ho, 
wohi qurban kar dalo,

Kiya be-kalab hai ah'hein,
kaha us se tarap mango!
utho tareeqi-e-shab mein
zara khoon-e-jigar dalo,

kaha raaz sakoon kiya hai?
kaha loogo se dukh banto!
jo chehra hai dhanak dekho,
usse rangoun se bhar dalo!!

Bahot nuqsan deti hai mujy yeh saadgi meri

Koi taweez aisa do kay mein chalaak ho jaun.......

Bahot nuqsan deti hai mujy yeh saadgi meri.....

Wednesday, 2 April 2014

Hum sy ik bar bhi jeeta hai na jeety ga koi

Ishq rah-zan na sahi, ishq k hathon phir bhi

Hm ny lut'ti hui dekhi hain Baraten aksar..

Hum sy ik bar bhi jeeta hai na jeety ga koi

Wo to hum jan k kha lety hain maaten aksar..

Un sy pocho kabhi chehry bhi parhy hain tum ny

Jo kitabon ki kiya karty hain baten aksar..

Hm ny un tund hawaon me jalaye hain charagh

Jin hawaon ny ulat di hain bisaten aksar..

Aur tu kon hai jo mujh Ko tasalli dy ga

Hath rakh deti hain dil par teri baten aksar...

Parakhna mat parakhne se koi apna nahi rehta

Parakhna mat parakhne se koi apna nahi rehta,
Kisi bhi Aaina me dair tak chehra nahi rehta...

Baray logon se milne me hamesha fasla rakhna,
Jahan darya samandar se mila, darya nahi rehta...

Tumhara Shehar to bilkul naye andaz wala hai,
Hamare shehar me bhi ab koi hum sa nahi rehta...

Mohabbat aik khushbu hai hamesha saath chalti hai,
Koi insan tanhai me bhi tanha nahi rehta....

Koi badal haray mausam ka phir ailan karta hai,
Khizan ke bagh mein jab aik bhi patta nahi rehta...

Kisi haal mein nahi hoon koi haal ab nahi hai کسی حال میں نہیں ہوں کوئی حال اب نہیں ہے

کسی حال میں نہیں ہوں کوئی حال اب نہیں ہے
جو گئی پلک تلک تھا وہ خیال اب نہیں ہے


میں سکون پا سکوں گا یہ گماں بھی کیوں کیا تھا
ہے یہی ملال کیا کم کہ ملال اب نہیں ہے


نہ رہے اب اس کے دل میں خلشِ شکستِ وعدہ
کہ یہاں کوئی حسابِ مہ و سال اب نہیں ہے


یہ دیارِ دید کیا ہے گئے دشتِ دل سے بھی ہم
کہ ختن زمین میں بھی وہ غزال اب نہیں ہے


جو لیے لیے پھری ہے تجھے روز اک نگر میں
مرے دل ترے نگر میں وہ مثال اب نہیں ہے


لبِ پُر سوال لے کے ہمیں کُو بہ کُو ہے پھِرنا
ہو کوئی جواب بر لب یہ سوال اب نہیں ہے

Naya ek rishta paida kyun karein hum نیا اک رشتہ پیدا کیوں کریں ہم

نیا اک رشتہ پیدا کیوں کریں ہم
بچھڑنا ہے تو جھگڑا کیوں کریں ہم

خموشی سے ادا ہو رسمِ دوری
کوئی ہنگامہ برپا کیوں کریں ہم

یہ کافی ہے کہ ہم دشمن نہیں ہیں
وفاداری کا دعویٰ کیوں کریں ہم

وفا، اخلاص، قربانی،مرو ّت
اب ان لفظوں کا پیچھا کیوں کریں ہم

سنا دیں عصمتِ مریم کا قصّہ؟
پر اب اس باب کو وا کیوں کریں ہم

زلیخائے عزیزاں بات یہ ہے
بھلا گھاٹے کا سودا کیوں کری ہم

ہماری ہی تمنّا کیوں کرو تم
تمہاری ہی تمنا کیوں کریں ہم

کیا تھا عہد جب لحموں میں ہم نے
تو ساری عمر ایفا کیوں کریں ہم

اُٹھا کر کیوں نہ پھینکیں ساری چیزیں
فقط کمروں میں ٹہلا کیوں کریں ہم

جو اک نسل فرومایہ کو پہنچے
وہ سرمایہ اکٹھا کیوں کریں ہم

نہیں دُنیا کو جب پرواہ ہماری
تو پھر دُنیا کی پرواہ کیوں کریں ہم

برہنہ ہیں سرِبازار تو کیا
بھلا اندھوں سے پردا کیوں کریں ہم

ہیں باشندے اسی بستی کے ہم بھی
سو خود پر بھی بھروسہ کیوں کریں ہم

پڑی رہنے دو انسانوں کی لاشیں
زمیں کا بوجھ ہلکا کیوں کریں ہم

یہ بستی ہے مسلمانوں کی بستی
یہاں کارِ مسیحا کیوں کریں ہم

Naya ek rishta paida kyun karein hum
Bicharna hai to jhhagra kyon karain hum
Khamoshi se ada ho rasm.E.Duri
Koi humgama barpa kyon karain hum
Ye kafi hai k hum dushman nahi hain
Wafa-Dari ka da’awa kyon karain hum
Wafa, ikhlaas, qurbani, mohabbat
Ab inn lafzon ka peecha kyon karain hum
Suna dain ismat.E.Maryam ka qissa?
Par ab iss baab ko waa kyon karain hum
Zulekhaa.E.Azeezaan baat ye hai
Bhala ghaatay ka sauda kyon karain hum
Hamari hee tamanna kyon karo tum
Tumhari hee tamanna kyon karain hum
Kia tha e’had jab lamhon mein hum nay
To saari umar iifa kyon karain hum
Nahi dunya ko jab parwah hamari
To phir dunya ki parwah kyon karain hum
Barehna hain sar.E.Bazaar to kia
Bhala andhon se pardah kyon karain hum
Hain baashinday issi basti k hum bhi
So khud par bhi bharosa kyon karain hum
Pari rehnay do insaanon ki laashain
Zameen ka bojh halka kyon karain hum
Ye basti hai muslamaanon ki basti
Yahan kar.E.Maseeha kyon karain hum

Tuesday, 1 April 2014

Kuch Shehar Ki Galyaan Bhi Pur-Asraar Bohat Hein کچھ شہر کی گلیاں بھی پُراسرار بہت ہیں

کچھ لوگ بھی وہموں میں گرِفتار بہت ہیں
کچھ شہر کی گلیاں  بھی پُراسرار بہت ہیں

ہے کون، اُترتا ہے وہاں جِسکے لیے چاند
کہنے کو تو چہرے پسِ دیوار بہت ہیں

ہونٹوں پہ سُلگتے ہوئے اِنکار پہ مَت جا
پلکوں سے پَرے بِھیگتے  اقرار بہت ہیں

یہ دُھوپ کی سازش ہے کہ موسم کی شرارت
سائے ہیں وہاں کم ، جہاں اشجار بہت ہیں

بے حرفِ طَلب اِنکو عطا کر کبھی خُود سے
وہ یُوں کہ سوالی تِرے خُوددار بہت ہیں

تُم مُنصِف و عادل ہی سہی شہر میں، لیکن
کیوں خُون کے چِھینٹے سرِ دستار بہت ہیں

اے ہجر کی بستی تُو سلامت رہے، لیکن
سُنسان تیرے کوچہ و بازار بہت ہیں

محسنؔ ہمیں ضِد ہے کہ ہو اندازِ بیاں اور
.....ہم لوگ بھی غالب کے طرفدار بہت ہیں

Kuch Log Bhi Wehmon Mein Giraftaar Bohat Hein
Kuch Shehar Ki Galyaan Bhi Pur-Asraar Bohat Hein

Hai Kon , Utarta Hai Wahan Jis K Liye Chaand
Kehne Ko Tou Chehrey Pas-E-Diwaar Bohat Hein

Honton Pe Sulagtey Huey Inkaar Pe Mat Jaa
Palko’n Se Parey Bheegtey Iqraar Bohat Hein

Yeh Dhoop Ki Sazish Hai Ke’h Mosam Ki Shararat
Saey Hai Wahan Kam,  Jahan Ashjaar Bohat Hein

Be Harf Talab Un Ko Ataa Kar Kabhi Khud Se
Woh Yun K Sawali Teray Khuddaar Bohat Hein

Tum Munsif-O-Adil He Sahi Shehar Mein Lekin
Kiun Khoon Chhee’ntey  Sar-E-Dastaar Bohat Hein

Ay Hijar Ki Basti  Tu Salamat Rahey Lekin
Sunsaan Terey Koocha-O-Bazaar Bohat Hein

Mohsin Hamein Zid Hai Keh Ho Andaz-E-Bayaan Aur
Hum Log Bhi Galib K Tarafdaar Bohat Hein…….

Kabhi Koi Nahi Sunta , Meray Alfaaz Ki Siski کبھی کوئی نہیں سنتا ، میرے الفاظ کی سسکی

سبھی تعریف کرتے ہیں میری تحریر کی لیکن
..کبھی کوئی نہیں سنتا ، میرے الفاظ کی سسکی 

Sabhi Tareef Karte Hain Meri Tehreer Ki Lekin
Kabhi Koi Nahi Sunta , Meray Alfaaz Ki Siski..

Teray Badan Se Teri Rooh Tak Nishaan Meray تیرے بدن سے تیری روح تک، نشاں میرے

کہاں کہاں سے مٹائے گا، خوش گماں میرے
تیرے بدن سے تیری روح تک، نشاں میرے

کہیں بھی جا کے بسا لے تُو بھول کی بستی
محیط ہیں تیرے، یادوں کے آسماں میرے

اگرچہ فاصلہ دو چند کر لیا تو نے
رواں دواں ہیں تیری سمت کارواں میرے

میں جاؤں بھی تو کہاں، چھوڑ کر تیری گلیاں
تُو کر گیا سبھی رستے دھواں دھواں میرے

عبور ہوتے نہیں، روز طے تو کرتا ہوں
یہ ہجر فاصلے، یہ بحرِ بے کراں میرے

ہوا کے بیڑے کسی اور سمت بہتے ہیں
کھلے ہیں اور کسی سمت بادباں میرے

میں اپنے جذبوں کی شدت سے خوف کھاتا ہوں
کہ دشمنوں سے ہیں بڑھ کر، یہ مہرباں میرے

میں خواب زار کی کرتا تو ہوں چمن بندی
اجاڑ دے نہ کوئی آ کے گلستاں میرے

شگوفے آ گئے پلکوں پہ درد کے آخر
 .... .چھپا سکے نہ میرے راز، راز داں میرے


Kahan Kahan Se Mitaey Ga Khush Gumaan Meray
Teray Badan Se Teri Rooh Tak Nishaan Meray

Kaheen Bhi Jaa K Basaley Tou Bhool Ki Basti
Moheet Hein Teray, Yaadon K Aasmaan Meray

Agar Chay Faasla Dou Chund Kar Liya Tu Ne
Rawaan Dawaan Hein Teri Simt Kaarwaan Meray

Mein Jaon Bhi Tou Kahan, Chorr Kar Teri Galyaan
Tu Kar Gaya Sabhi Rastey Dhuwaan Dhuwaan Meray

Uboor Hotey Nahi, Roz Tou Tay Karta Hoon
Yeh Hijr Faasley, Yeh Hijr-E-Be-Karaan Meray

Hawa K Bairrey Kisi Aur Simt Behtey Hein
Khuley Hein Aur Kisi Simt Baadbaan Meray

Mein Apne Jazbon Ki Shiddat Se Khof Khata Hoon
Keh Dushmano Se Hein Barh Kar, Yeh Meharbaan Meray

Mein Khuwab Zaar Ki Karta Tou Hon Chaman Bandi
Ujaarr Dey Na Koi Aa K Gulistaan Meray

Shagoofey Aagaey Palkon Pe Dard K Aakhir
Chupaa Sakey Na Meray Raaz, Raazdaan Meray……

Janey Kis Ka Ho Baitha Hoon جانے کس کا ہو بیٹھا ہوں

سُدھ بُدھ اپنی کھو بیٹھا ہوں
جانے کس کا ہو بیٹھا ہوں

غیروں سے اب کیا ہے ڈرنا
سب اپنوں کو رو بیٹھا ہوں

میں تو نہیں ہوُں تھکنے والا
ساتھ ہو تُم جب، تو بیٹھا ہوں

تُم کو کیا دُنیا کی فکریں
میں ہوُں نا، میں جو بیٹھا ہوں

میرا تُم سے اب کیا جھگڑا
چھوڑو،جانے دو، بیٹھا ہوں

جو تھے ساتھی چلے گئے ہیں
میں بھی جانے کو بیٹھا ہوں

ہر جانب نفرت کی فصلیں
جانے میں کیا بو بیٹھا ہوں

جاتے جاتے تُم نے کہا تھا
تُم آؤگے، سو بیٹھا ہوں

بیچ چوراہے گندے کپڑے
...ہائے صبا کیوں دھو بیٹھا ہوں


Sudh Budh Apni Kho Baitha Hoon
Janey Kis Ka Ho Baitha Hoon

Gairon Se Ab Kia Hai Darna
Sab Apno Ko Ro Baitha Hoon

Mein Tou Nahi Hoon Thakney Wala
Sath Ho Tum Jab, Tou Baitha Hoon

Tum Ko Ki Dunya Ki Fikrein
Mein Hoon Na, Mein Jo Baitha Hoon

Mera Tum Se Ab Kia Jhagrra
Chorro, Janey Do, Baitha Hoon

Jo Thay Sathi Chaley Gaey Hein
Mein Bhi Janey Ko Baitha Hoon

Har Jaanib Nafrat Ki Faslein
Janey Mein Kia Ho Baitha Hoon

Jatey Jatey Tum Ne Kaha Tha
Tum Aaogey, So Baitha Hoon

Beech Chorahe Gandey Kaprrey
Hy Saba Kiun Dho Baitha Hoon

Monday, 31 March 2014

Mein nafraton ke jahan mein reh kar میں نفرتوں کے جہاں میں رہ کر، جدا رھوں گا تو کیا کروں گا..؟؟

میں نفرتوں کے جہاں میں رہ کر، جدا رھوں گا تو کیا کروں گا..؟؟
یہ ٹھیک کہتے ہو بیوفا ہوں، وفا کروں گا تو کیا کروں گا..؟؟

..بس ایک تو ہی تو رہ گیا ہے، جہاں سارا تو کھو چکا ہوں
تجھے بھی اپنی انا میں آ کر، خفا کروں گا تو کیا کروں گا..؟؟

..ہزار سجدے تو کر چکا ہوں قضا تمہاری محبتوں میں
میں اب دکھاوے کا کوئی سجدہ ادا کروں گا تو کیا کروں گا..؟؟

..بغیر پانی بھی کوئی مچھلی، بھلا کبھی رہ سکی ہے زندہ
میں تجھ کو کھو کر، کسی کا ہو کر، بتا کروں گا تو کیا کروں گا.. ؟؟

Wednesday, 5 March 2014

Khayal mein Hai koi Aur Roobaroo Koi Aur خیا ل میں ہے کوی اور،روبرو کوی اور

خیا ل میں ہے کوی اور،روبرو کوی اور
مگر ہے با عث تکمیل آرزو کوی اور

 کھلیں گے آج عجب راز کھڑکیوں کی طرح
ہوا کا آج ہے موضوع گفتگو کوئ اور 

کسی کو ڈھا ل بنا نا مجھے پسند نہیں
مرے لیۓ ہو بھلا کیوں لہو لہو کوئ اور

مرا گما ں بھی ہے محکم، یقیں بھی مستحکم
مری تلاش میں ہے مجھ سا ہوبہو کوئ اور 

نہیں، یہ ذ کر مرے ساۓ کا نہیں جمشید
رہا ہے آج مرے سا تھ کوبکو کوئ اور

Tuesday, 4 March 2014

Baba Mujh Ko Dar Lagta Hai بابا مجھ کو ڈر لگتا ہے

!بابا مجھ کو ڈر لگتا ہے

بابا میری مس کہتی ہیں
کل سے سب بچوں کو اپنے
!گھر رہنا ہے گھر پڑھنا ہے

!میں نے سنا ہے
‘‘ایک بڑے سے، کالی مونچھوں والے ’’انکل
بم لگا کر آئیں گے
!سب بچے مر جائیں گے

بابا کیوں ماریں گے ہم کو!؟
ہم سے کوئی بھول ہوئی کیا؟
ہم سے کیوں ناراض ہیں انکل؟

بابا ان کو گڑیا دے دوں؟
یا پھر میرے رنگوں والی یاد ہے نا وہ نیلی ڈبیا
میری پچھلی سالگرہ پر مجھ کو آپ نے لا کر دی تھی
اور میری وہ پیاری پونی
!ریڈ کلر کی تتلی والی
وہ بھی دے دوں؟
پھر تو نہ ماریں گے مجھ کو؟

!یاد ہے بابا ایک دفعہ جب
!مجھکو ہاتھ پہ چوٹ لگی تھی
!!بہت زیادہ درد ہوا تھا
!تھوڑا خوں بھی نکلا تھا
!!بہت زیادہ روئی تھی میں

کیا یہ بم بڑا ہوتا ہے؟
بہت زیادہ چوٹ لگے گی؟
!!درد زیادہ ہو گا۔۔۔۔۔۔شاید
!بابا مجھ کو ڈر لگتا ہے

Le Urrein Sath Hawaein Mujhe Aisa to Nahi لے اڑیں سا تھ ہوایں مجھے،ایسا تو نہیں

لے اڑیں سا تھ ہوایں مجھے،ایسا تو نہیں
میں کہ پتا تو نہیں، خا ک کف پا تو نہیں 
  سر جھکا تا ہوں تو یہ عجز ہے میرا، ورنہ 
آسما ں میرے خیا لات سے اونچا تو نہیں 
    اس نے چوما ہو کسی اور کے دھوکے میں مجھے
  میرے جزبوں کی یہ شدت کہیں بے جا تو نہیں 
  ہا تھ سے پوچھیے، آنکھوں کا بھروسہ کیا ہے
 بہتے دریا کو بھی کھ دیں کہ یہ دریا تو نہیں 
 کون جمشید مجھے سا تھ لیۓ پھرتا ہے؟
میرا پیکر بھی کسی جسم کا سا یہ تو نہیں

Darakht-E-Jaan Pe Azaab Rut Thi درختِ جاں پر عذاب رُت تھی

درختِ جاں پر عذاب رُت تھی
 نہ برگ جاگے نہ پھول آئے 
بہار وادی سے جتنے پنچھی
،ادھر کو آئے ملول آئے

نشاطِ منزل نہیں تو ان کو
 کوئی سا اجرِ سفر ہی دے دو
وہ رہ نوردِ رہِ جنوں جو
، پہن کے راہوں کی دھول آئے

وہ ساری خوشیاں جو اس نے چاہیں
 اُٹھا کے جھولی میں اپنی رکھ لیں
                    ہمارے حصّے میں عذر آئے
، جواز آئے ، اصول آئے
اب ایسے قصّے سے فائدہ کیا
 کہ کون کتنا وفا نِگر تھا
جب اُس کی محفل سے آگئے 
،اور ساری باتیں ہیں بھول آئے

وفا کی نگری لُٹی تو اس کے
 اثاثوں کا بھی حساب ٹھہرا
کسی کے حصّے میں زخم آئے
، کسی کے حصّے میں پھول آئے

بنامِ فصلِ بہار آزر
  وہ زرد پتے ہی معتبر تھے
جو ہنس کے رزقِ خزاں ہوئے ہیں
،..... جو سبز شاخوں پہ جھول آئے

Darakht-E-Jaan Pe Azaab Rut Thi
Na Burg Jaagay Na Phool Aaey
Bahaar Waadi Se Jitney Panchi
Idhar Ko Aaey Malool Aaey ,

Nishat-E-Manzil Nahi Tou UnKo
Koi Sa  Ajr-E-Safar He Dey  Do
Woh Reh Norid-E-Reh Junoo Jo
Pehan K Raahon Ki Dhool Aaey ,

Woh Sari Khushyan Jo Us Ne Chahi
Utha K Jholi Mein Apni Rakh Leei’n
Hamarey Hissay Mein Uzar Aaey
Jawaaz Aaey , Usool Aaey ,

Ab Aisay Qissay Se Faida'h Kia
Ke'h Kon Kitna Wafa Nagar Tha
Jab Us Ki Mehfil Se Aagaey
Aur Saari Batein Hein Bhool Aaey ,

Wafa Ki Nagri Luti Tou Us K
Asaaso'n Ka Bhi Hisaab Thehra
Kisi K Hissey Mein Zakhm Aaey
Kisi K Hissey Mein Phool Aaey ,

Ba-Naam-E-Fasl-E-Bahaar Aazir
Woh Zard Pattay He Moatabar Thay
Jo Huns K Rizq-E-Khizaan Huey Hein
Jo Sabz Shakho'n Pe Jhool Aaey........ ,

Be-wafa Koi Sitamger Bhi To Ho Sakta Hai

Be-wafa Koi Sitamger Bhi To Ho Sakta Hai,
Mera Qatil Mera Rehber Bhi To Ho Sakta Hai..!

Ek Mudat Se Tuje Wird Mein Rakha Jis Ne,
Wo Muhbbat Mein Qalandar Bhi to Ho Sakta Hai..!

Tere Koochy Mein Jo Aya Hai Ghulamon Ki Tarha,
Apni Basti Ka Sikandar Bhi To Ho Sakta Hai..!

Silsilawar Agar Ashak Bhi Giray Jaein,
Yeh Jo Sehra Hai Samandar Bhi To Ho Sakta Hai..!

Kab Talak Tere Khyalon K Sahary Jiye Jaein Mohsin,
Dil Teri Yaad Se Munkar Bhi To Ho Sakta Hai !

Tery Lehjay Ka Dheema Pan تیرے لہجے کا دھیمہ پن

.تیرے لہجے کا دھیمہ پن
.میری وحشت یہ کہتی ہے

.محبت جب کبھی ہوگی
نہایت ٹوٹ کر ہوگی

Tery Lehjay Ka Dheema Pan
Meri Wehshat Yeh Kehti hai

Mohabbat Jab Kabhi Ho Gi
Nehaayat Toot Kar Ho Gi

Thursday, 27 February 2014

Ghamon ke jo sab yeh maare log hain غموں کے جو سب یہ مارے لوگ ہیں

غموں کے جو سب یہ مارے لوگ ہیں
بّہت ہی سب یہ پیارے لوگ ہیں

تنہائی ہجر جفا سب کو سمو رکھا ہے
اِک شخص میں کتنےیہ' سارے لوگ ہیں

غم کو بھی سمجھتے ہیں یہ واثت اپنی
کوئی نا چھینوں یہ' انگارے لوگ ہیں

ٹھوکر لگے کسی کو تو اّٹھا لیتے ہیں
کم ظرف جہاں میں یہ 'سہارے لوگ ہیں

ملیں گے اِن سے وفا کا پّوچھتے مطلب
جن کی نظر میں یہ بے'چارے لوگ ہیں

دیکھ کہ اپنا سایہ بّجھاتے ہیں دیے کو
کیسی عجب تنہائی کےیہ' مارے لوگ ہیں

کبھی تّمھیں درد مِلے تو یاد کرنا''شاہ جی''
ہم میں سے ہیں یہ 'ہمارے لوگ ہیں

Wednesday, 26 February 2014

Umar Ki Saari Thakan Laad K Ghar Jata Hon عمر کی ساری تھکن لاد کے گھر جاتا ہوں

عمر کی ساری تھکن لاد کے گھر جاتا ہوں
رات بستر پہ میں سوتا نہیں مر جاتا ہوں

اکثر اوقات بھرے شہر کے سناٹے میں
اس قدر زور سے ہنستا ہوں کہ ڈر جاتا ہوں

دل ٹھہر جاتا ہے بھولی ہوئی منزل میں کہیں
میں کسی دوسرے رستے سے گذر جاتا ہوں

سمٹا رہتا ہوں بہت حلقہء احباب میں، مَیں
چار دیواری میں آتے ہی بکھر جاتا ہوں

میرے آنے کی خبر صرف دیا رکھتا ہے
میں ہواؤں کی طرح ہو کے گزر جاتا ہوں

میں نے جو اپنے خلاف آج گواہی دی ہے
وہ ترے حق میں نہیں ہے تو مکر جاتا ہوں

Umar Ki Saari Thakan Laad K Ghar Jata Hon 
Raat Bistar Pe Me Sota Nhi Mar Jata Hon 

Aksar Auqaat Bharey Shehar K San-Natte Me 
iS Qadar Zoor Se Hansta Hon K Dar Jata Hon 

Mere Aany Ki Khabar Sirf Diya Rakhta Hy 
Me Hawaon Ki Tarah Aa K Guzar Jata Hon 

Simta Rehta Hon Bohut HaLqa-E-Ahbab Me Main, 
Chaar-Diwari Me Aatey He Bikhar Jata Hon 

MeNe Apne KhiLaf Khud He Gawahi Di Hy 
Agar Wo Tere Haq Me Nhi Hy To Mukar Jata Hon.

Is se pehle ke bewafa ho jaeyn

Is se pehle ke bewafa ho jaeyn 
Kyon na aiy dost hum juda ha jayin 
Tu bhi heeray se ban gaya pathar 
Hum bhi kal jane kya se kya ho jayin 
Tu k yakta tha beshumar howa 
Hum bhi tootain to jabaja ho jayin 
Hum bhi majboriyoon ka uzer karin 
Phir kahin or mubtala ho jayin 
Hum agar manzilein na ban payin 
Manzilon tak ka rasta ho jayin 
Dair se sooch main hain parwane 
Raakh ho jayin, hawa ho jayin 
Ishq bhi khel hai naseebon ka 
Khak ho jayin, chemia ho jayin 
ab k agar tu mile to hum tujh se 
aise liptin teri quba ho jayin 
bandagi hum ne chor di hai FARAZ 
kya karien log jab khuda ho jayin